ورلڈ ٹی20،اگلا 8 سالہ پروگرام،گلوبل ایونٹس سمیت اہم ایشوز،آئی سی سی اہم اجلاس کل

عمران عثمانی

انٹر نیشنل کرکٹ کونسل کا ہنگامہ خیز اجلاس کل یکم جون 2021 کو ہوگا،منگل کو ہونے والےا جلاس میں بہت کچھ ٹیبل پر موجود ہے جس کی فائنل وسل بجنی ہے اور اس میں شامل تازہ ترین ایشو ورلڈ ٹی 20 کی میزبانی جے حوالہ سے بھی کوئی حتمی رائے قائم کرنا ہے.آئی سی سی بورڈز میٹنگ میں تمام مستقل رکن ممالک کے چیفس شرکت کریں گے،ورچوئل کانفرنس میں کئی ممالک کے ٹاپ آفیشلزآن لائن شریک ہونگے.

انٹر نیشنل کرکٹ کونسل کے اجلاس میں اس سال بھارت میں شیڈول ورلڈ ٹی 20 کے حوالہ سے اس کی میزبانی کی یو اے ای منتقلی کا امکان ہے لیکن بھارتی کرکٹ بورڈ نے ایک ہفتہ میں نیاپلان تیار کرکے آئی سی سی کو ایک نیا پلان دینے اور ایک درخواست کرنے کا فیصلہ کیا ہے،نیا پلان یہ ہے کہ ورلڈ ٹی 20کے میچز اپنے ملک میں کروانے کے لئے 9 کی بجائے 3 وینیوز کا منصوبہ پیش کیا جائے گا.بھارت میں کورونا کی نئی لہر کی وجہ سے آئی پی ایل ملتوی ہوچکا ہے اور باقی میچز ستمبر،اکتوبر میں یو اے ای میں ہونگے لیکن اکتوبر ،نومبر کے ورلڈ ٹی 20 کے لئے بھارت سٹینڈ لینا چاہتا ہے اور اس کے لئے اس نے پہلے سے مختص 9 وینیوز میں سے 6 ڈراپ کرکے ایونٹ 3 مقامات تک محدود کرکے آئی سی سی سے اپنےملک میں کروانے کی کوشش کا فیصلہ کیا ہے اور ساتھ ہی ایک درخواست ہوگی کہ ٹیکس معاملات پر آئی سی سی سے ایک ماہ اور مانگا جائےگا کیونکہ آئی سی سی ایونٹ پر بھارت تاحال اپنے ملک سے ٹیکس کٹوتی کی اجازت نہیں لے سکا ہے،اس کے جواب میں آئی سی سی اور رکن ممالک کی جانب سے سخت مخالفت کرنے کا امکان ہوگا کیونکہ اپنے ملک سے آئی پی ایل باہر لے جانے والے ملک کے قول و فعل میں تضاد سمجھاجائے گا اور ٹیکس معاملات میں بھارت تاحال آئی سی سی کو کلیئرنس نہیں دے سکا،یہ معاملہ بہت پرانا ہوگیا ہے.

آئی سی سی اجلاس میں اگلے 8 سالہ فیوچر ٹور پروگرام کی منظوری بھی دی جائے گی جس میں اگلی ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کا خاکہ،ٹیموں کی تعداد زیادہ کئے جانے کا امکان ہے،اسی طرحورلڈ کپ اور ورلڈ ٹی 20میں ٹیموں کی تعداد زیادہ کئے جانے کی اطلاعات ہیں.ورلڈ کپ میں 10سے 14ا ور ورلڈ ٹی 20 میں 16سے 20 ٹیمیں کی جاسکتی ہیں،اطلاق 2023 کے بعد سے ہوگا.اگلے 8سال میں گلوبل ایونٹس کی تعداد فائنل کرنا بھی اہم مشن ہوگا،آئی سی سی 2019میں 8ایونٹس کی منظوری دے چکا تھا لیکن آسٹریلیا،بھارت اور انگلینڈ کی مخالفت کے بعد دیکھیں کہ اب معاملہ 8 پر جاتا ہے اور یا پھر 6 تک رکتا ہے.

آئی سی سی اجلاس میں گلوبل ایونٹس کے ساتھ بڑھتی ٹی 20 لیگز کے حوالہ سے بھی کچھ بحث ہوگی اور یہ دیکھاجائےگا کہ انٹر نیشنل کرکٹ پر ڈومیسٹک ٹی 20 لیگز کیوں غلبہ پارہی ہیں اور پلیئرز کو اس حوالہ سے کیا گائیڈ لائنز دی جائیں.اجلاس میں آئی پی ایل کو ستمبر ،اکتوبر میں یو اے ای لے جانے کو شک کی نگاہ سے دیکھا جائے گا کہ کیا یہ ورلڈ ٹی 20 کو وہاں منتقل کئے جانے کے خوف سے تو نہیں کیا گیا ہے