مین آف دی میچ ایوارڈ بیٹی کے نام،حسن علی کا اعلان،بابر اعظم اور برینڈن ٹیلر کیا کہہ گئے

ہرارے ٹیسٹ میں اپنی شاندار بائولنگ کے ساتھ پاکستان کی جیت کو جلدی یقینی بنانے والے حسن علی نے مین آ فی دی میچ ایوارڈ اپنی بیٹی کے نام کردیا ہے،انہوں نے میچ کے بعد ہونے والی تقریب میں کہا ہے کہ میں یہ اعزاز اپنی پیاری بیٹی کے نام کرتا ہوں.حسن علی نے اس موقع پر مزید کہا ہے کہ بائولنگ میں بہتری کے لئے کام کر رہا ہوں اور اس کے نتائج نکل رہے ہیں،کیچ پکڑ کر جشن بس تھوڑا جوش پیدا کرنے کے لئے تھا.اپنی پرفارمنس سے مطمئن ہوں.

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے کہا ہے کہ پلان کے مطابق کھیلے،بیٹنگ میں تھوڑی دیرکے لئے مشکل ضرور پیش آئی اور ہم نے اسے قابو پالیا،ہم نے 300 رنزکی برتری کا سوچا تھا ،50رنز کم ہونے سے فرق کوئی نہیں پڑا،تمام لڑکوں نے اچھی پرفارمنس پیش کی ہے.

دوسرے ٹیسٹ کے حوالہ سے بابر اعظم نے کہا ہے کہ ابھی اس میں چند دن باقی ہیں.2دن تو اب ہم آرام کریں گے اور اس کے بعد اس کا سوچیں گے.دوسرا ٹیسٹ 7مئی سے ہرارے میں ہی کھیلاجائے گا.

زمبابوے کپتان برینڈن ٹیلر نے اپنی ٹیم کی شکست پر مایوسی کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ ان کی بائولنگ ٹھیک تھی لیکن بیٹنگ میں کسی نے ذمہ داری نہیں لی،جس کا نقصان ہوا ہے،ہمارے بیٹسمینوں کو اسے دیکھنا ہوگا.

پاکستان نے زمبابوے کے خلاف پہلا ٹیسٹ اننگ اور 116 رنز سے جیت لیا ہے اوریہ بھی اتفاق ہے کہ میچ 3دن بھی مکمل نہیں ہوا جبکہ مین بائولر شاہین آفریدی کی بجائے حسن علی 9وکٹ لے کر مین آف دی میچ کا اعزاز لے اڑے.اس میچ میں فواد عالم نے اپنے کیریئر کی چوتھی سنچری مکمل کی اوروہ 14رنزبناکر آئوٹ ہوئے جبکہ ان کے علاوہ کوئی بھی بیٹسمین سنچری نہ کرسکا ہے.بابر اعظم سمیت 3کھلاڑی صفر پر گئے.