ٹیسٹ سیریز،زمبابوے کا پاکستان کے خلاف وہ ریکارڈ جو کسی بڑے ملک کے خلاف نہیں،بابر اعظم پریشان ؟

عمران عثمانی

پاکستان اور زمبابوے کے درمیان 2ٹیسٹ میچزکی سیریز کا آغاز 29 اپریل 2021سے ہورہا ہے.دونوں ممالک کی ٹیسٹ تاریخ 27سے 28 سال پرانی ہے اور دونوں کے مابین 9ویں سیریز ہونے جارہی ہے،اس سے قبل 8 بار یہ ممالک ٹیسٹ سیریز کھیل چکے ہیں.1990کے عشرے میں جب زمبابوے نے ٹیسٹ اسٹیٹس لیا تو باقاعدگی سے سیریز ہوتی تھیں لیکن زمبابوے کے بگڑتے کرکٹ حالات،معطلی،ٹیسٹ اسٹیٹس کے عارضی خاتمہ کے باعث گزشتہ 18 سے 19سال میں اس کی انٹر نیشنل کرکٹ بری طرح متاثر ہوئی اور اسی وجہ سے پاکستان کے خلاف سیریز بھی محدود ہوتی گئیں.

زمبابوے سلیکٹرز کا پاکستانی بیٹسمینوں کے لئے نیا تعویذ،ٹیسٹ اسکواڈ کا اعلان

اس ریسرچ سے بھر پور آرٹیکل میں دونوں ممالک کے ٹیسٹ اعدادوشمار کی بات ہوگی.میچز اور سیریز کا اجمالی ذکر ہوگا ،ٹیسٹ سیریز کا مختصر سا جائزہ ہوگا،اس سے اگلے آرٹیکل میں پاکستان کی زمبابوے میں کھیلی گئی آخری سیریز کا ذکر ہوگا اور اس سے اگلے آرٹیکل میں زمبابوے کی پاکستان کے خلاف پاکستان میں گھس کر رقم کی گئی تاریخی جیت کا تذکرہ ہوگا اورآخری آرٹیکل میں پاکستان اور زمبابوے کے درمیان اب تک کھیلے گئے ٹیسٹ میچز کی پرفارمنس کا ذکر ہوگا اور ساتھ میں پیش کی گئی نمایاں پرفارمنسز کا بھی احاطہ کیا جائے گا.

کرک سین کا یہ وطیرہ رہا ہے کہ وہ پاکستان کی ہر سیریز سے قبل ایسے ہی عنوانات کے ساتھ تحقیقاتی آڑٹیکل شائع کرتا ہے تاکہ میچز دیکھنے والوں کا اندازہ ہوسکے کہ ان کی تاریخ کیا رہی ہے،مزاج کیا تھا اور پرفارمنس کیسی تھی.

سب سے قبل ذکر ہو کہ پاکستان اورزمبابوے کے مابین اب تک کتنے ٹیسٹ میچز ہوئے ہیں،تو 1993 سے2021 تک دونوں ممالک میں جو 17ٹیسٹ میچز ہوئے ہیں،ان میں زمبابوے نے ایک نہیں ،2نہیں بلکہ 3کامیابیاں اپنے نام کر رکھی ہیں،زمبابوے جیسا اسٹیٹس رکھنے والا ملک پاکستان جیسے کرکٹ ملک کے خلاف 3 ٹیسٹ میچز جیت چکا ہے .

اب میں یہاں اپنے پڑھنے والوں کو بتانا چاہوں گا کہ زمبابوے کی کسی بھی بڑے ملک کے خلاف یہ سب سے ہائی کلاس پرفارمنس ہے.آپ انداز اکریں کہ پاکستان کی طرح اس نے نیوزی لینڈ سے بھی 17ٹیسٹ میچزکھیلے.سری لنکا سے تو 20میچز کھیل لئے اور ویسٹ انڈیز سے 10 جبکہ جنوبی افریقا سے وہ 9ٹیسٹ میچزکھیل چکا.انگلینڈ سے 6 اور بھارت سے 11میچز کھیلنے میں کامیاب ہوا لیکن کمال اتفاق ہے کہ ان ممالک کے خلاف وہ سنگل میچ بھی نہیں جیتا،آسٹریلیا سے صرف 3میچز میں کامیابی کا امکان کہاں ملنا تھا،چنانچہ ان بڑے ممالک کے ریکارڈز کو دیکھ کر آپ پاکستان کے خلاف اس کا ریکارڈ دیکھیں کہ اس نے 3 ٹیسٹ میچز جیت رکھے ہیں.باقی بنگلہ دیش جیسے ملک سے اس نے 17میں سے 7جیتے ہیں اور افغانستان سے کھیلے گئے 2میچزمیں حساب کتاب 1-1سے برابر ہے.اس ریکارڈ سے یہ علم ہوا کہ پاکستان بھی زمبابوے کے لئے افغانستان اور بنگلہ دیش کی طرح حلوہ بنارہا ہے اور یہ ایک افسوسناک ریکارڈ ہے.

دوسری تشویشناک بات یہ ہے کہ پاکستان اور زمبابوے کی کھیلی گئی 8سیریز میں سے پاکستان 6میں کامیاب ہوا ہے تو ایک سیریز اپنے ملک میں ہارا ہے اور اسی طرح ایک سیریز زمبابوے میں جیتنے میں ناکام رہا ہے اور وہ سیریز ڈرا رہی تھی.

پاکستان اور زمبابوے کے ٹیسٹ میچزکی طرح ٹیسٹ سیریز میں پاکستان زمبابوے کے لئے آسان شکار رہا.سری لنکا اور ویسٹ انڈیز جیسے ممالک بھی ناقابل شکست رہے تو موجودہ بابر اعظم الیون کے لئے تشویشناک بات یہ ہونی چاہئے کہ ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ سے باہر اور سب سے بڑی بات سب سے کم رینک والی ٹیم کے خلاف شکست تو چھوڑیں،ڈرا میچ بھی ناقابل قبول ہوگا.