جنوبی افریقا اپنے آخری دورہ پاکستان میں بھی کامیاب،کئی دلچسپ اتفاقات،انضمام الحق کا باب بند

عمران عثمانی
Image By youtube
پاکستان اور جنوبی افریقا ٹیسٹ سیریزجوں جوں قریب آرہی ہے،ویسے ہی جوش وخروش بڑھ رہا ،ایک تو طویل عرصہ بعد کوئی بڑی ٹیم یہاں طویل فارمیٹ کےلئے ایکشن میں ہوگی اور دوسر اجنوبی افریقا اپنے آخری دورہ پاکستان کے بعد پہلی بار ایکشن میں ہوگا۔کرک سین دونوں ممالک کی باہمی ٹیسٹ سیریز کا احوال روزانہ کی بنیا د پر شائع کر رہا ہے،اتفاق سے آج جس سیریز کا نمبر بنتا ہے وہ جنوبی افریقا کا 2007کا آخری دورہ پاکستان تھا،دونوں ممالک کے درمیان 7ویں سیریز ہونی تھی،کل ہم نے چھٹی سیریز کا جائزہ پیش کیا تھا،ایک اور اتفاق یہ بھی ہے کہ 2007کے سال میں دونوں ممالک ہوم اور اوے کی بنیاد پر 2سیریز کھیل گئے،ایسا اتفاق کم ہی ہوتا ہے۔یہ سیریز اس لئے بھی یاد گار ہے کہ پاکستان کے لیجنڈری ہیرو انضمام الحق کو الوداعی ٹیسٹ اسی سیریز میں ملا۔وہ لاہور میں آخری ٹیسٹ کھیل کر طویل فارمیٹ سے ریٹائرڈ ہوگئے۔
پاکستان جنوبی افریقا چھٹی ٹیسٹ سیریز،بھر پور فائٹ،زبردست مزاحمت لیکن
یکم اکتوبر 2007کوکراچی میں پہلا ٹیسٹ کھیلا گیا،اب یہ بھی اتفاق دیکھیں کہ 2021کی 14 سال بعد پاکستان میں ہونے والی ٹیسٹ سیریز کا آغاز بھی کراچی سے ہی ہوگا۔گریم اسمتھ کے مقابلے میںشعیب ملک کپتانی کر رہے تھے۔2میچز کی اس سیریز میں ٹاس دونوں بار پروٹیز کے حق میں گرا۔دونوں بار مہمان ٹیم نے پہلے بلے بازی کی۔کراچی ٹیسٹ میں جنوبی افریقا نے جاک کیلس کی سنچری کی بدولت 450ررنزکئے،پاکستان کی جانب سے اسپنر عبد الرحمان نے 105رنز دے کر4آئوٹ کئے،محمد آصف کے حصہ میں ایک اور عمر گل کے نام 2وکٹیں آئیں۔مصباح الحق جوآج ہیڈ کوچ ہیں،وہ بھی یہ سیریز کھیلے لیکن شعیب ملک کے 73رنزکے علاوہ کوئی بھی قابل قدر انداز میں نہ چل سکا،ٹیم 291پر باہر ہوگئی،پال ہیرس 5آئوٹ کرگئے۔پرٹیزکے لئے جاک کیلس نے پھر سنچری بنادی،ٹیم نے 264رنز7وکٹ پر اننگ ڈکلیئر کرکے پاکستان کو جیت کے لئے424رنزکا ہدف دیا،اس بار بھی عبد الرحمان نے 4آئوٹ کئے۔ہدف کے تعاقب میں قومی ٹیم263رنزبناکر چلتی
بنی،یونس خان کے 126رنزبھی رائیگاں گئے،پاکستان160رنز سے ہار گیا،اس اننگ کے ہیرو ڈیل اسٹین تھے جنہوں نے 5آئوٹ کئے۔
لاہور کا دوسرا ٹیسٹ8اکتوبر سے شروع ہوا،مہمان ٹیم نے یہاں بھی پہلے بلے بازی کی اور357رنزبناڈالے،جاک کیلس 59رنز کے ساتھ پھر ٹاپ اسکورر تھے،دنیش کنیریا کے حصہ میں 4وکٹیں آئیں،پاکستانی بیٹنگ لائن پھر دھوکا دے گئی اور صرف206رنزکر سکی۔کامران اکمل نے نمایاں 52 رنز کئے۔اپنا آخری ٹیسٹ کھیلنے والے انضمام الحق صرف 14رنزہی کرسکے،پروٹیز نے دوسری اننگ 305رنز4وکٹ پر ڈکلیئر کی،گریم اسمتھ اگرچہ 133کے ساتھ ٹاپ پر رہے لیکن جاک کیلس نے پھر سنچری اسکور کی،یہ ان کی اس سیریز میںتیسری تھری فیگر اننگ تھی۔پاکستان کو 457کاہدف ملا،ٹیم نے 107اوورز بیٹنگ کی،4وکٹ پر316رنز اسکور کئے،یونس خان نے130 اور محمد یوسف نے63رنزکئے،کامران اکمل بھی 71کرگئے،اپنے کیریئر کی آخری اننگ کھیلنے والے انضمام 3رنز بناکر بوچر کے ہاتھوں اسٹمپ ہوگئے،وہ جاوید میاں دادکا ملک کے لئے اس وقت قائم کردہ زیادہ ٹیسٹ8832 رنزبنانےکا ریکارڈنہ توڑ سکے اور ان کا کیریئر 8829پر تمام ہوا،اب یونس خان10099رنزکے ساتھ ٹاپ پر ہیں۔میچ ڈرا پر ختم ہوا،سیریز جنوبی افریقا نے 0-1 سے جیت لی۔پاکستانی سر زمین پر یہ اس کی دوسری فتح تھی۔
جاک کیلس 2میچز کی سیریز میں421رنز بناکر ٹاپ کرگئے.

اپنا تبصرہ بھیجیں