قلندرزقلندرز،24 گھنٹوں میں دوسری جیت،زلمی بھی ہارگئی

رپورٹ وتجزیہ : عمران عثمانی

ایک روز قبل اسلام آباد یونائیٹڈ کے خلاف بہت مشکل سے فتح حاصل کرنے والی لاہور قلندرز ٹیم نے 24 گھنٹو ں میں مسلسل دوسری کامیابی حاصل کر کے سب کے لئے خطرے کی گھنٹی بجادی ہے اور پوائںٹس ٹیبل پر 10 پوائنٹس کے ساتھ نہ صرف ٹاپ پوزیشن برقرار رکھی ہے بلکہ ساتھ ہی پلے آف میں جانے کے لئے قریب کنفرمیشن دے دی ہے.افغان اسپنر راشد خان جنہوں نے اسلام آباد کے خلاف 4اوورز میں 9رنزدے کر 2آئوٹ کئے تھے،انہوں نے زلمی کا جلوس نکال دیا،5کھلاڑی آئوٹ کرکے کمر توڑڈالی اور اپنی جیت یقینی بنالی،شعیب ملک کی73رنزکی اننگ رائیگاں گئی.ابو ظہبی کے میدان میں قلندرز قلندرز ہوگئی ،شروع میں 25پر 4وکٹ کھونے والی لاہور ٹیم نے پھر ایسا کم بیک کیا وہاب ریاض الیون ناچنے پر مجبور ہوگئی.رنزوں کی برسات بھی قلندرز کا حصہ بنی اور وکٹون کی برسات بھی اس کے لئےبرسی.

شیخ زید کرکٹ اسٹیڈیم ابو ظہبی میں اس نے جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب 10 رنز سے فتح کو گلے لگایا،ایک رات قبل بعد میں بیٹنگ کرکے جیت حاصل کی تھی اور اب بعد میں فیلڈنگ کرکے فتح اپنے نام کی،قلندرز کی نئی اٹھان سے یہ واضح ہورہا ہے کہ اس بار ٹیم بلند عزائم کے ساتھ سامنے آئی ہے اور ٹرافی اٹھانے کے لئے فیورٹ ہے.

پشاور زلمی نے 171 رنز کا تعاقب شروع کیا تو یہ آسان نہیں تھا کیونکہ اس سے قبل کے میچ میں کراچی کنگز بھی ملتان سلطانز کے خلاف 170سے زائد کے ہدف میں ناکام گئی تھی،خیر اننگ کا آٍغاز ہی تباہ کن ہوا.5کے مجموعہ تک کامران اکمل ایک اور حیدر علی 3کرکے جاچکے تھے.دونوں کا شکار جیمز فالکنر نے کیا،نازک ترین موقع پر شعیب ملک اور ڈیوڈ ملر نے تیسری وکٹ پر 51کی شراکت قائم کی.56کے مجموعہ پر ڈیوڈ ملر 21رنزبناکر راشد خان کا شکار بن گئے،افغان اسپنر کی کفایتی اور خطرناک گیند بازی عروج پر جارہی تھی .ملر نے 21 رنزکے لئے23 بالز کھیلیں.راشد خان کی گھومتی بالز نے زلمی کو گھمادیا،اگلی4وکٹیں بھی راشد خان نے ہی اڑادیں،انہوں نے رومین پاول اور فیبن ایلن کو صفر پر چلتا کردیا جبکہ ردر فرڈ 15 اور وہاب 17رنزبناکر ان کا نشانہ بنے . راشد خان نے اننگ کے 16ویں اوور تک اپنے 4اوورز مکمل کئے اور صرف 20رنزکے عوض 5وکٹیں اڑا کر زلمی کی کمر ہی توڑ ڈالی.

تجربہ کار بیٹسمین شعیب ملک اکیلے ہی مزاحمت کر رہے تھے،انہوں نے اس دوران ہاف سنچری بھی مکمل کی لیکن گرنے والی وکٹوں نے انہیں بھی پریشان کر رکھا تھا.114پر 7وکٹ کھونے والی زلمی ٹیم کے لئے شعیب ملک امید بنے تھے جنہوں نے 17ویں اوور میں 2 چھکے لگائے اور اسکور 128تک پہنچادیا،اب 18 بالز پر 43اسکور باقی تھے.اب 2اوورز میں 41رنز باقی تھے.اننگ کے 19ویں اوور میں شعیب ملک بھی ہمت ہارگئے اور48بالز پر 4 چھکوں اور 7چوکوں کی مدد سے73کرنے والے حارث رئوف کا نشانہ بنے،آخری اوور رسمی طور پر کھیلا گیا.راشد خان کی 5وکٹ کا تو ذکر ہوچکا،ان کے علاوہ فالکنر نے 23 رنز دے کر 2آئوٹ کئے. ھارث رئوف نے ایک وکٹ کے لئے 38رنزکھائے.خیر سنسنی خیزی آخری اوور میں اس وقت ہوگئی کہ عمید آصف نے شاہین آفریدی کو چھکا جڑ دیا.4بالز پر 17تھے،ایک بال ضائع ہوئی تو اگلی بال پر چھکا لگ گیا. 2بالز پر 11 اسکور ایک امید ضرور تھی لیکن شاہین نے 5ویں بال اچھی کرکے اپنی ٹیم کی جیت یقنی بنادی،عمید آصف12بالز پر 23 کے ساتھ ناٹ آئوٹ گئے،زلمی کی اننگ 8وکٹ پر 160 پر تمام ہوئی،قلندرز 10رنز سے کامیاب رہا.

اس سے پہلے پشاور زلمی کے کپتان وہاب ریاض کا ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ غلط ثابت ہوا کیونکہ قلندرز نے اسکور بورڈ پراچھا ہدف سیٹ کردیا تھا.15پر 3 اور 25 پر 4 بڑی وکٹیں گنوانے والی ٹیم اگر 171کا ہدف لگادے تو یقینی طور پر کوئی بڑا ہیرو ہی سامنے آیا ہوگا،اب اس بات کو دیکھیں کہ فخر زمان ایک،سہیل اختر 7،محمد فیضان 8 اور محمد حفیظ2رنزبناکر پویلین میں سر جھکائے ہوئے تھے.8واں اوور بھی چال رہا تھا،میچ پر وہاب ریاض اور محمد عرفان کا کنٹرول تھا،ایسے میں ایک معجزاتی کام ہوگیا.

بین ڈنک نے شاید اسی روز کام آنا تھا اورٹم ڈیوڈ نے تو خیر ایک رات قبل بھی شاندار بیٹنگ کی تھی دونوں نے 5ویں وکٹ پر 81رنزکااضافہ کیا جبکہ قریب 7اوورز میں یہ سب کرلیا.106کے مجموعہ پر 33بالز پر 48رنزکرنے والے بین ڈنک آئوٹ ہوگئے،راشد خان بھی 8کرسکے لیکن جیمز فالکنر نے آخر میں 7بالز پر 22کی اننگ کھیل کر مجموعہ کو لمبا جمپ لگوایا.دوسری جانب ٹم ڈیوڈ نے بھی آخری لمحات تک شاندار بلے بازی کی،انہوں نے 36 بالز پر 64 کئے.5 چھکے اور3چوکے لگائے.آخری 4اوورز میں 60 سےزائد اسکور بنائے گئے.قلندرز نے مقررہ اوورز میں 8وکٹ پر 170 اسکور کئے.

زلمی کی جانب سے فیبن ایلن نے 2 جبکہ باقی سب بائولرز نے ایک ایک وکٹ لی.

اپنا تبصرہ بھیجیں