پی ایس ایل بائولنگ ایکسپریس،وہاب ریاض کی ریاضت قائم، حسن علی کی اب نئی اٹھان

عمران عثمانی
Image By propakistani.pk
پاکستان سپر لیگ کے آغاز میں اب صرف 5دن باقی بچے ہیں،20 فروری ہفتہ سے کراچی میں پی ایس ایل 6کادھماکے دار آغاز ہوگا،کرکٹ کا میلہ سجےگا،ایک ماہ سے بھی زائد عرصے کے لئے پاکستان میں کرکٹ کا زور عروج پر ہوگا جو کئی ممالک کو اپنی لپیٹ میں لئے رکھے گا۔
کرک سین نے چند روز قبل اس کے حوالہ سے اہم ریکارڈز ومعلومات کا سلسلہ شروع کیا تھا ،اب تک بیٹنگ کے دلچسپ ریکارڈ پیش کئے جاچکے ہیں،اس مضمون میں پی ایس ایل بائولنگ کے خاص ریکارڈزپیش کئے جائیں گے،پاکستان جنوبی افریقا سیریز کے باعث درمیان میں تھوڑا تعطل واقع ہوا ،اب تواتر کے ساتھ متعدد منفرد چیزیں پیش کی جائیں گی۔پاکستان کرکٹ کے آج کے حالات بھی دیکھے جائیں تو ٹیم بیٹنگ کے مقابلے میں بائولنگ میں بہتر ہے،پی ایس ایل سے بھی پاکستان کو نامور ستارے ملے ہیں بلکہ اس وقت کا بائولنگ اٹیک پی ایس ایل کی بنیادی شناخت رکھتا ہے۔
پی ایس ایل بیٹنگ ،کامران اکمل اوربابراعظم کا ایک باب میں شرمناک ریکارڈ،حیران کن اعدادوشمار
پی ایس ایل کے 5 ایڈیشن کے ریکارڈز دیکھے جائیں تو ٹاپ وکٹ ٹیکرز کے اکثر پلیئرز قومی ٹیم میں شامل ہیں۔اب تک55 میچزمیں 76وکٹیں لینے والے پشاور زلمی کے وہاب ریاض اپنے ہم عصر کے لئے کھلا چیلنج ہیں،اگرچہ وہ ان دنوں ٹیم سے ڈراپ ہیں لیکن اپنی تیز بائولنگ کی وجہ سے کسی بھی وقت کم بیک کرسکتے ہیں۔ایک دلچسپ بات یہ ہے کہ وہاب ریاض کبھی بھی کسی بھی میچ میں 4سے زائد وکٹ نہیں لے سکے۔ان کی بہترین بائولنگ 17رنزکے عوض 3وکٹ کی ہے لیکن معاملہ یہ ہے کہ وہ اب بھی 76وکٹ کے ساتھ نمبر ون گیند باز ہیں۔ان کے قریب ترین دوسرے بائولرحسن علی ہیں ،وہ بھی اتفاق سے پشاور زلمی کی نمائندگی کرتے ہیں،انہوں نے45 میچز میں 59شکار کئے،ان کی بہترین بائولنگ15رنزکے عوض 4وکٹیں ہے،وہ 3بار 4وکٹ لے چکے ہیں،وہاب کی ایوریج پونے 19 اور ایکانومی ریٹ 7 سےتھوڑا زائد جبکہ حسن کی اوسط21 اور اکانومی ریٹ ساڑھے 7کے قریب ہے۔کراچی کنگز کے لئے کھیلنے والے محمد عامر تیسرے ٹاپ وکٹ ٹیکر ہیں،انہوں نے48میچزمیں 25 سے زائد کی اوسط اور سوا7کے اکانومی ریٹ کے ساتھ48میچزمیں 49وکٹیں لے رکھی ہیں۔بہترین پرفارمنس 25رنزکے عوض 4وکٹ کی ہے اور 4وکٹیں وہ 2بار اپنے نام کرچکے ہیں،حسن علی نے حال ہی میں ٹیسٹ اور ٹی 20پرفارمنس کےساتھ بہترین واپسی کی ہے لیکن محمد عامر ٹیم منیجمنٹ سے اختلافات کے باعث ریٹائرمنٹ لے چکے ہیں۔یہ تینوں پیسرز ہیں جو پی ایس ایل تاریخ میں چھائے ہوئے ہیں،چوتھا نمبر اسپنر محمد نواز کا ہے جنہوں نے 14 فروری کو پروٹیز کے خلاف آخری ٹی 20 میچ میں واپسی کی،انہوں نے52میچزمیں 49آئوٹ کررکھے ہیں،کوئٹہ کے لئےکھیلنے والے اسپنرکی بہترین بائولنگ 13رنزکے عوض 4وکٹ ہے۔اس بار بھی وہاب ریاض کا ریکارڈ ٹوٹنا مشکل ہے۔
پی ایس ایل بیٹنگ کارنر،بابر اعظم کامران اکمل کوپچھاڑ کربھی پیچھے رہیں گے،8بیٹسمینوں کے کلب کے اورامیدوار
پی ایس ایل میں کوئی بائولر کسی میچ میں 7کھلاڑی آئوٹ نہیں کرسکا،بہترین انفرادی بائولنگ میں انگلش کھلاڑی روی بوپارا پہلے نمبر پر ہیں،انہوں نے12فروری 2016کو پہلے ایڈیشن میں کراچی کے لئے کھیلتے ہوئے شارجہ میں کوئٹہ کے 6کھلاڑی 16رنزکے اندر اپنے نام کرلئے تھے،9مارچ 2019کو یونائیٹڈ کے لئے کھیلنے والے فہیم اشرف نے قلندرز کے خلاف کراچی میں 6وکٹ کے لئے 19رنز دیئے،چنانچہ یہ دوسری بہترین بائولنگ بنی۔7مارچ 2018کو دبئی میں سلطانز کے لئے کھیلنے والے عمر گل نےگلیڈی ایٹرز کے خلاف 6وکٹ کے لئے 24رنز دیئے،عمر گل آج بھی پاکستان کے لئے بہترین بائولنگ کا ریکارڈ رکھتے ہیں۔شاہین شاہ آفریدی کی 4رنزکے عوض 5 وکٹیں،شاہد آفریدی کی 7رنزکے اندر 5وکٹ اورمحمد سمیع کی 8رنزکے عوض 5وکٹ بھی قابل ذکر بات ہے۔
پاکستان سپرلیگ،پشاور زلمی کے سب سے زیادہ میچز،لاہور قلندرزناکامی میں آگے،دیگر اہم ریکارڈز
پاکستان سپر لیگ کی تاریخ میں کسی بھی سنگل میچ کے مہنگے ترین بائولر بھی شاہین آفریدی ہیں،انہیں کراچی میں 9مارچ 2019کو یونائیٹڈ کے بیٹسمینوں نے بڑا مارا تھا،قلندرز کے لئے کھیلنے والے لیفٹ ہینڈ پیسر کو 4اوورز میں 62رنز پڑے تھے،کسی بھی ایک ایڈیشن میں سب سے زیادہ 25وکٹ لینے کا کارنامہ حسن علی کےنام ہے۔2019کے ایڈیشن میں انہوں نے13میچز کھیل کر 25وکٹیں لیں،آج کے بائولرز کے لئے یہ بھی ایک کھلا چیلنج ہےکہ وہ اس سے زائد وکٹیں لیں۔حسن علی ڈومیسٹک کرکٹ کھیل کر حالیہ پروٹیز سیریز میں ایک قسم کادوسرا ڈیبیو کرچکے ہیں،وہ اس سال سب سے بڑا خطرہ ہونگے.

اپنا تبصرہ بھیجیں