پی ایس ایل بیٹنگ کارنر،بابر اعظم کامران اکمل کوپچھاڑ کربھی پیچھے رہیں گے،8بیٹسمینوں کے کلب کے اورامیدوار

عمران عثمانی
Image By crictracker
پاکستان سپر لیگ 6کے آغاز میں اب کچھ ہی وقت باقی ہے،ٹیموں میں حتمی اکھاڑ پچھا ڑ ہوچکی ہے لیکن اب بھی کئی اہم کھلاڑی رجسٹرڈ ہونے جارہے ہیں،جنوبی افریقا ٹیم کی آسٹریلیا سے سیریز منسوخی کےبعد متعدد کرکٹرز سے فرنچائزز نے رابطے کرلئے ہیں جس کی تفصیلات آنے کو ہیں۔
کرک سین نے پی ایس ایل کےقریب آتے ہی پی ایل ایس ایل ایڈیشن کے نام سے ایک سلسلہ شروع کیا ہے،جس کا ابتدائی مضمون پیش کیا جاچکا ہے،آج یہاں اس کا دوسرا آرٹیکل پیش خدمت ہے۔یہاں پاکستان سپرلیگ کے اہم ترین ریکارڈز کا تذکرہ ہوگا ،پی ایس ایل 6کے آغاز پر یہ ریکارڈز کام آئیں گے۔کرکٹ فینز ان ریکارڈز کی روشنی میں موقع پر جان سکیں گے کہ کون سانیا ریکارڈ بننے جارہا ہے۔
پاکستان سپرلیگ،پشاور زلمی کے سب سے زیادہ میچز،لاہور قلندرزناکامی میں آگے،دیگر اہم ریکارڈز
بیٹسمینوں کی پرفارمنس کا جائزہ لیا جائے تو پاکستان سپر لیگ کی 5 سالہ تاریخ میں کامران اکمل پہلے دن سے ہی ٹاپ پر ہیں،انہوں نےمجموعی اسکور میں سب کوپیچھے لگائے رکھا ہے لیکن 2021میں اگر وہ ن چلے تو پھر متعدد کھلاڑی ان کی جگہ لینے کے امیدوار ہونگے،ان میں سر فہرست پاکستانی کپتان بابر اعظم ہیں۔کراچی کنگز کے لئے کھیلنے والے بابر اعظم 47میچزکی 45اننگز میں قریب 38کی اوسط سے1516رنزبناکر لسٹ میں دوسری پوزیشن پر ہیں۔کامران اکمل نےپشاور زلمی کے لئے 56میچزکھیلے ہیں اور 29کی اوسط سے 1537اسکور کئے ہیں۔اسلام آباد اور کراچی کنگز کی مجموعی طور پر نمائندگی کرنے والے بابر اعظم کامران اکمل سے ایک باب میں پیچھے ہیں اور وہ یہ کہ کامران اکمل نے 3سنچریز بنائی ہیں اور بابر اعظم تاحال ایک بھی سنچری نہ کرسکے لیکن ان کی 14ففٹیز کامران اکمل کی 9نصف سنچریز سے زائد ہیں۔لسٹ میں اسلام آباد،کوئٹہ کے لئے کھیلنے والےآسٹریلیا کے شین واٹسن 46میچزمیں 1361رنزکے ساتھ تیسرے،کراچی،ملتان اور پشاور کے لئے کھیلنے والے شعیب ملک48میچزمیں 1127کے ساتھ چوتھے اورملتان،کوئٹہ کی نمائندگی کرنےوالے احمد شہزاد45میچز میں 1077کے ساتھ 5ویں نمبر پر ہیں۔لاہور قلندرز کے فخرزمان 40میچزمیں 1064،اسلام آباد کی نمائندگی کرنے والے لک رانچی31میچزمیں 1020اور لاہور،پشاور کے کیمپ سے کھیلنے والے محمد حفیظ48میچزمیں 1002اسکور کرچکے ہیں۔
پی ایس ایل میں ان 8کرکٹرز کے سوا کوئی بھی 1000رنز مکمل نہیں کرسکا ہے۔اس سال متعدد کھلاڑی 1000کا سنگ میل عبور کرنے کے قریب ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں