پنت کی سنچری نے آسٹریلیا اورایشیا کپ کی چھٹی کروادی؟انضمام کا تبصرہ اورکرک سین کے سوالات بھی ساتھ

عمران عثمانی
Image Issues Twitter
رشاب پانت نے انگلینڈ کے خواب خاک میں ملادیئے ہیں،یہی نہیں بلکہ آسٹریلیا کی نبض بھی دم توڑنے لگی ہے کیونکہ ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل کی جانب بھارت کی پیش قدمی تیز ہوگئی ہے،اگر یہی صورتحال رہی تو 2کام ہونگے،آسٹریلیا پہلی ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل سے باہر ہوجائے گا اور ساتھ میں ایشیا کی کرکٹ ٹیموں پر اس کے اثرات مرتبت ہونگے ۔بھارت کے فائنل میں کوالیفائی کرنے کی صورت میں اس کی جون کی مصروفیت نکل آئے گی اور جون میں ہونے والا ایشیا کپ ملتوی یا منسوخ ہوجائے گا۔اس کی تصدیق پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی بھی کرچکے ہیں۔
سب سے پہلے رخ کرتے ہیں احمد آباد کا،جہاں بھارت ،انگلینڈ کے درمیان جاری چوتھے وآخری ٹیسٹ میچ کا دوسرا دن رشاب پانت کے نام رہا،انہوں نے انگلینڈ کی خوشیاں چھین لیں،آسٹریلیا کو خوش فہمی سے باہر نکال دیا۔205پر آئوٹ ہونے کے بعد اس نے بھارت کے 6صف اول کے کھلاڑی 146پر پویلین بھیج دیئے تھے،یہ ایسا موقع تھاکہ انگلش بائولرز حاوی ہورہےتھے اور اگلے 50رنز میں باقی ماندہ 4کھلاڑی آئوٹ کرنا چاہتے لیکن ان سے نمبر 8پر کھیلنے والے ٹیل ایندرواشنگٹن سندر ہی شکار نہیں ہوسکے،جنہوں نے 5ویں نمبر کےبیٹسمین رشاب پانت کے ساتھ 7ویں وکٹ پر113رنزبنالئے اور انگلینڈ کے ہاتھ سے سب کچھ چھین لیا،اس دوران رشاب پانت نے اپنی سنچری مکمل کی،وہ101رنزبناکر آئوٹ ہوئے تو میلہ لوٹ چکے تھے،کھیل کے خاتمہ پر سندر 60 پر ناٹ آئوٹ تھے اور بھارت کا اسکور7وکٹ پر294 ہوگیا تھا،اسے انگلینڈ پر 89رنزکی سبقت حاصل ہوچکی ہے اور اس کی 3 وکٹیں باقی ہیں۔انگلینڈ کی جانب سےجمی اینڈرسن نے 3 اور جیک لیچ و بین سٹوکس نے 2،2وکٹیں لیں۔اس سے قبل بھارت کو بڑے نقصانات کا اس وقت سامنا کرنا پڑا جب ویرات کوہلی صفر پر گئے،روہت شرما 49،چتشور پجارا17 اور اجنکا رہانے 27 رنزکرسکے ۔انگلینڈ نے پہلی اننگ میں 205 رنزبنائے تھے۔
ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل کی دوسری ٹیم کا انحصار اس میچ کے نتیجہ پر ہے،نیوزی لینڈ کوالیفائی کرچکا ہے جبکہ بھارت اس ٹیسٹ کے ڈرا یا جیتنے سے ہی ٹکٹ کٹوالے گا جبکہ آسٹریلیا بھارت کی شکست کی صورت میں ہی جاسکتا ہے اور انگلینڈ یہ میچ جیت کر سیریز میں ڈرا کے نتیجہ کے ساتھ سرخرو ہوسکتا ہے لیکن اب لگتا ہے کہ کافی دیر ہوگئی ہے۔
پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان و سابق چیف سلیکٹر انضمام الحق نے اپنے یو ٹیوب چینل پر اس میچ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ رشابھ پنت نے کمال کارکردگی دکھائی،ایسا لگتا ہے کہ وہ دبائو پروف ہیں،146پر 6آئوٹ ہوں اور بے فکر ہوکر کھیل رہے ہوں تو کمال اعصاب ہیں،ان کے نزدیک پچ،حریف بائولرز کی کوئی پروا نہیں ہوتی،یہ وریندر سہواگ کی دوسری کاپی ہے۔پنت دبائو سے آزاد ہوکر کھیلتے ہیں۔یہ سب سے الگ مختلف بات ہے،کرکٹ میں بڑے عرصے کے بعد ایسے پلیئرز آئے ہیں۔اتنے یقین کے ساتھ کھیلنا لاجواب بات ہے۔آج پنت کا دن ہے۔سندر نے بھی بھر پور ساتھ دیا ہے،اس نے 117 بالز کھیل کر جم کر بیٹنگ کی۔یہ اچھی چیزیں دیکھنے میں آئی ہیں۔بھارتی ٹیم کی بیٹنگ اس وقت بہت مضبوط ہے،یہ کسی بھی ٹیم کو کسی بھی کنڈیشن میں پکڑسکتے ہیں،بھارت کی تو لوئر مڈل آرڈر بیٹنگ بھی میچ جیتنے میں لگی ہے،یہ بات تو بہت کم ٹیموں میں دکھائی دیتی ہے۔
انضمام کہتے ہیں کہ ویرات کوہلی بہت بڑا پلیئر ہے،اس وقت آئوٹ آف فارم ہے،میں سمجھ سکتا ہوں کہ ان پر برا وقت چل رہا ہے اور وہ اس سے نکل جائیں گے،اس ٹیسٹ کی وکٹ گزشتہ میچ سے مختلف ہے،جو بھی اچھا کھیلے گا،وہ ضرو ر اسکور کرے گا۔بھارت کی برتری اچھی ہوگئی ہے،اب انگلینڈ کے لئے واپسی مشکل ترین ہے کیونکہ یہ برتری 100 سے اوپر جائے گی۔
کرک سین تجزیہ کے مطابق اب انگلینڈ کی واپسی بہت مشکل ہے،اس لئے صاف دکھائی دے رہا ہے کہ وہ ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کا فائنل کھیلے گا۔
ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن فائنل میں بھارت کے کوالیفائی کرنے کے اثرات تمام ایشیائی ٹیموں پر پڑیں گے کیونکہ جون میں شیڈول ایشیا کپ ممکن نہیں ہوسکے گا،فائنل میچ 18سے 22جون کے درمیان انگلینڈ میں کھیلا جائے گا.آئی سی سی کے زیر اہتمام ہونے والی پہلی ٹیسٹ چیمپئن شپ کے فائنل میں جانے والی دوسری ٹیم نیوزی لینڈ کی ہے،آسٹریلیا کے لئے تشویش کی بات یہ ہوگی کہ وہ فائنل میں نہیں جاسکا اور انگلینڈ کے لئے دکھ کی بات یہ ہوگی کہ وہ بھی فائنل سے باہر ہیں.دوسری جانب ایشیائی ٹیموں کے لئے بھارت کا فائنل کھیلنا نقصان دہ ہوگا،اگر چہ ابھی آفیشلی اعلان نہیں ہوا کہ ایشیا کپ کا کیا مستقبل ہوگا لیکن پی سی بی چیئرمین احسان مانی کہہ چکے ہیں کہ اگر بھارت نے فائنل کھیلا تو ایشیا کپ 2023تک موخر ہوسکتا ہے،ویسے اس قدر عجب بیان بازی کا مطلب کیا تھا؟کیا اس سال کے ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل کے اثرات اگلے سال کے ستمبر میں شیڈول ایونٹ پر بھی پڑیں گے؟اور کیسے پڑسکتے ہیں؟کیا فیصلے بالا بالا ہی کئے جاچکے ہیں؟کیا اس طرح بڑے ایونٹس کی قسمت کے فیصلے کئے جاتے ہیں.