حفیظ کی وجہ سے پاکستان بیک فٹ پر گیا:رمیز راجہ،شعیب اختر نےتو بڑی وجہ اور بتادی

جنوبی افریقا کے خلاف پاکستان کرکٹ ٹیم فیورٹ ہونے کے باوجود دوسرا ٹی20میچ کیوں ہارگئی.رمیز راجہ کہتے ہیں کہ کچھ سمجھ نہیں آیا کہ بیٹنگ میں ایسا کیا ہوگیا.رمیز راجہ کہتے ہیں کہ محمد رضوان نے کیوں جلدی کی،پہلی ہی بال پر غلط شاٹ کھیل گئے.شرجیل خان کو سمجھنا ہوگا کہ انہیں مشکل سے موقع ملا ہے،اپنے آپ کو وقت دینا ہوگا ،ورنہ درجنوں اننگز کے بعد چلنے کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا.
جنوبی افریقا کے خلاف جوہانسبرگ میں رضوان صفر پر گئے جبکہ شرجیل 8 اسکور کرسکے،پاکستانی ٹیم کی وکٹیں گرتی رہیں اور ٹیم 20اوورز میں 9وکٹ پر 140اسکور کرسکی تھی.

رمیز راجہ کہتے ہیں کہ بابر اعظم سیٹ ہوکر 50 رنز کرگئے لیکن آخری 5 اوورز میں وہ ہٹنگ نہیں کرسکے.پھر پارٹنر شپ بھی نہ ملیں.رضوان حالانکہ تحمل مزاجی سے کھیلتے ہیں لیکن بڑی جلدی کرگئے،شرجیل نے مدتوں بعد ملنے والا موقع ضائع کردیا،آپ جتنے بھی اچھے چھکے ماریں،ایسے نہیں چلے گا،بے تکی سی شاٹ کھیلی گئیں.جنوبی افریقا نے ہاری ہوئی ٹیم کو بیک کیا اور وہ بائولرز کی وجہ سے جیت گئے.یہ اچھی حکمت عملی تھی.

رمیز راجہ کہتے ہیں کہ پاکستان کی وکٹیں جلد گرگئیں،اسی طرح حفیظ کی اننگ اچھی چل رہی تھی مگر ان کے آئوٹ ہونے سے پاکستان بیک فٹ پر چلا گیا.پھر 140ہی بنے.بابر کو دیکھنا چاہئے تھا کہ جب اسکور کم تھا تو شروع میں تمام بائولرز کو اوپر اٹیک کروایا جاتا.حفیظ اچھا کھیل رہے تھے لیکن وہ 32 کے انفرادی اسکور پر شکار ہوگئے.

دوسری جانب شعیب اختر کہتے ہیں کہ کسی ٹیم کا کوئی بھی پلیئر اگر 50 بالز کھیلتا تو 50 اسکور نہ بنتا اگر بابر کے ساتھ وکٹیں گر رہی تھیں تو مارکرم کے ساتھ بھی گر رہی تھیں لیکن وہ تو اسکور سے نہیں رکے،یہ غلط انداز ہے.اسی طرح بائولنگ کا پلان اچھا نہ تھا،حسن علی سے نیا بال کروادیا جاتا.محمد حسنین بھی ناکام گئے،پیچھے بالیں کیں.شعیب اختر کہتے ہیں کہ وکٹ کا رویہ اچھا نہیں تھا ،بعد میں کچھ بہتر ہوئی.مجھے لگا کہ پاکستان کمزور تھا.تھوڑا وقت دینا ہوگا.

جنوبی افریقا کی شکست پر دکھی انضمام کا پاکستان کی ناکامی پر حیرت انگیز رد عمل

شعیب اختر نے پیش گوئی کی ہے کہ جنوبی افریقا کو کم بیک کروادیا،اب اگلا میچ گلے پڑسکتا ہے.پروٹیز برتری لے جائیں گے،پھر ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ اچھا نہ تھا،پاکستانی بیٹسمین تبریز شمسی کو سمجھ نہیں پارہے اور آئوٹ ہوتے جارہے ہیں.پاکستان اس برینڈ کے ساتھ چل نہیں سکتا،آدھے گھنٹے بعد اسی پچ پر مارکرم کھل کر کھیل رہا تھا.

پاکستانی کرکٹ ٹیم کی بیٹنگ میں وہ سوچ ہی دکھائی نہ دی.بابر بہتر نہ چل سکے،پاکستان بابر کی وجہ سے کم اسکور کرسکا.بابر کا 13ویں اوور سے اٹیک کرنا چاہئے تھا.93 اسکور تھا .6 وکٹ موجود تھے تو 7 اوورز میں اسکور ڈبل ہوتا،بابر 80یا 85 کرجاتا،بدقسمتی سے بابر ناکام جارہا ہے،جیسی اننگ درکار ہوتی ہے،ویسی وہ کھیل ہی نہیں پارہا.

پاکستان اور جنوبی افریقا کی کرکٹ ٹیمیں آخری 2 ٹی 20میچز اب سنچورین میں کھیلیں گی.پاکستان ٹیم تاریخ میں کبھی بھی پروٹیز کے خلاف مسلسل 3 ٹی 20میچز جیت ہی نہیں سکی،اس بار بھی لاہور اور جوہانسبرگ کے 2میچز مسلسل جیتنے کے بعد ردھم ٹوٹ گیا اور ٹیم ہارگئی.محمد حفیظ ٹی 20میں ایرون فنچ کے 2346 کے اسکور کوکراس کرگئے ہیں .