پاکستان جنوبی افریقا چھٹی ٹیسٹ سیریز،بھر پور فائٹ،زبردست مزاحمت لیکن

عمران عثمانی
Image By abc.net.au
پاکستان اور جنوبی افریقا کی ٹیمیں 26 جنوری سے شیڈول پہلے ٹیسٹ میچ کے لئے نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں صف آرا ہونے والی ہیں۔21جنوری جمعرات سے اس گرائونڈ میں باقاعدہ پریکٹس کا آغاز ہوجائےگا۔دونوں ٹیموں کے ماضی کے کھیلے گئے ٹیسٹ میچز و سیریز کا احوال روزانہ کی بنیاد پر کر ک سین شائع کر رہا ہے،آج یہاں چھٹی سیریز کا تذکرہ ہے۔
2003میں ہوم گرائونڈ پر پاکستان نے پہلی بار جنوبی افریقا کو ٹیسٹ سیریز میں شکست دے دی تھی،اس کے بعد اگلی سیریز2007میں جنوبی افریقا میں کھیلی گئی،گرین کیپس ایک اعتبار سے دفاعی چیمپئن بھی تھے،اس لئے امید کی جارہی تھی کہ اس بار پاکستان جنوبی افریقا میں جیت کر آئے گا۔پاکستانی ٹیم انضمام الحق جبکہ پروٹیز گریم اسمتھ کی قیادت میں کھیل رہے تھے،پاکستان کو حفیظ اور محمد آصف کی خدمات حاصل تھیں۔سنچورین میں پہلا ٹیسٹ سال 2007کے پہلے ماہ کے دوسرے عشرے کے آغاز میں شروع ہوا۔قومی ٹیم دونوں اننگز میں 300سے زائد اسکور کرکے بھی ہارگئی،پہلی اننگ میں بنائے گئے313رنزمیں یونس اور یاسر کی ففٹیز تھیں۔مکھایا نٹینی نے 5کھلاڑی آئوٹ کئے،پروٹیز نے 417رنزکئے جبکہ محمد آصف نے 5آئوٹ کئے،پاکستان نے دوسری باری میں302 رنز کئے،پروٹیز کو199کا ہدف ملا جو اس نے 3وکٹ پر پورا کرکے سیریز میں 0-1کی برتری لے لی۔دوسرا ٹیسٹ پورٹ الزبتھ میں کھیلا گیاجو پاکستان 4 دن میں 5وکٹ سے جیت کر سیریز 1-1سے برابر کردی۔میزبان سائیڈ کی ناکامی کی بنیادی وجہ اس کا پہلی اننگ میں124 پر آئوٹ ہوجانا تھا،شعیب اختر نے 4جبکہ دنیش کنیریا نے 3آئوٹ کئے،پاکستان نے265رنزکئے،انضمام 92پرناٹ آئوٹ گئے۔141رنزکے خسارے میں جانے کے بعدجنوبی افریقا نے 331رنزبنائے،اس بار محمد آصف نے 5آئوٹ کئے ،پاکستان کو191رنزکا ہدف ملا جو اس نے 5وکٹ پر پورا کرلیا۔
سیریز کا فیصلہ کن ٹیسٹ کیپ ٹائون میں26 جنوری 2007سے کھیلا گیا،پاکستان کی فتح کا اثر اتنا معمولی تھا کہ پروٹیز نے اسے 3دن میں شکار کرکے نہ صرف میچ جیت لیا بلکہ سیریز اپنے نام کرلی۔وجہ بیٹنگ کی مکمل ناکامی تھی ،پہلی اننگ میں 157پر فل اسٹاپ لگا،محمد یوسف83رنزبناکر ٹاپ اسکورر رہے۔معاملہ ابھی بھی نہیں بگڑا تھا کیونکہ جنوبی افریقا خود183پر ڈھیر ہوگیا۔پاکستانی بیٹنگ لائن بائولرز کی جانب سے دی گئی اس مدد سے پھر فائدہ نہ اٹھاسکی اور 186پر باہر ہوگئی۔پروٹیز کو 161رنزکا ہدف ملا ،ابتدائی 3اننگزدیکھتے ہوئے شائقین کو امید تھی کہ شاید پاکستانی گیند باز کوئی کمال دکھادیں اور ایسا سوچنا غلط بھی نہ تھا،پھر پروٹیز کے ٹاپ 4بیٹسمین 39پر پویلین لوٹ گئے تھے لیکن پھر جاک کیلس اورایشول پرنس کی ففٹیز اور سنچری سے بڑی شراکت کے باعث جنوبی افریقا نے ہدف 5وکٹ پر پورا کر ہی لیا۔جاک کیلس میچ اور سیریز کے بہترین کھلاڑی قرار پائے۔پاکستان اگرچہ یہ سیریز 1-2 سے ہار گیا تھا لیکن گرین کیپس نے بھر پور مزاحمت کی اور 1 میچ جیتا اور فیصلہ کن میچ میں آخری لمحہ تک بھر پور مقابلہ کر کے تگڑی حریف ٹیم ہونے کا ثبوت دیا۔
پاکستان اور جنوبی افریقا کے درمیان مجموعی طور پر 12ویں ٹیسٹ سیریز26جنوری 2021سے شروع ہوگی،چھٹی سیریز کے اختتام تک پروٹیز کو 1-4 سے برتری حاصل تھی،ایک سیریز ڈرا رہی تھی،اگلی 5سیریز کا تذکرہ آنے والے دنوں میں جاری رہے گا.

اپنا تبصرہ بھیجیں