پاکستان زمبابوے سے ٹیسٹ سیریز ہارگیا،اصل وجہ جانئے،کرداروں سے ایک مطالبہ

تفصیلی رپورٹ : عمران عثمانی

پاکستان اور زمبابوے کی ٹیسٹ سیریز کے آغاز میں اب صرف ایک دن کا وقفہ رہ گیا ہے ،دونوں ممالک کے مابین 2میچزکی 9ویں سیریز کا پہلا میچ کل 29 اپریل سے ہرارے میں کھیلا جائےگا.کرک سین پاک زمبابوے ٹیسٹ سیریز کے حوالہ سے تیسرا منفرد ترین آرٹیکل پیش کر رہا ہے .

دونوں ممالک کی پہلی سیریز نومبر،دسمبر 1993میں کھیلی گئی،یہ سیریز پاکستان میں ہوئی جو گرین کیپس نے 0-2 سے جیت لی.
پاکستان اور زمبابوے کی اگلی سیریز جنوری،فروری 1995 میں زمبابوے میں کھیلی گئی،پاکستان سیریز کا پہلا میچ ہی اننگ اور 64 رنز سے ہارگیا لیکن پھر اس نے اگلے 2 میچز جیت کر سیریز 1-2سے اپنے نام کرلی.اس سیریز میں زمبابوے نے پاکستان کے خلاف تاریخی پہلی ٹیسٹ کامیابی حاصل کی تھی.

ٹیسٹ سیریز،زمبابوے کا پاکستان کے خلاف وہ ریکارڈ جو کسی بڑے ملک کے خلاف نہیں،بابر اعظم پریشان ؟

دونوں ممالک کی تیسری سیریز اکتوبر 1996میں پاکستان میں ہوئی.2میچزکی سیریز میں پاکستان 0-1 سے کامیاب رہا.

پاکستان اور زمبابوے کی چوتھی سیریز مارچ 1998میں پاکستان میں ہوئی،2میچزکی سیریز میں پاکستان 0-1سے فتحیاب رہا.

1998کے آخر میں زمبابوے نے پاکستان کا دورہ کیا،نومبر ،دسمبر 1998میں کھیلی گئی 3میچز کی سیریز میں پاکستان کو پہلی باربڑا جھٹکا لگا جب قومی ٹیم اپنے ملک،اپنے میدانوں میں کمزور حریف سے سیریز ہارگئی،اس کا ذکر تھوڑا آگے ہوگا.

نومبر 2002 میں پاکستان نےزمبابوے میں کھیلی گئی 2میچزکی سیریز 0-2 سے جیت لی.

2011میں پاکستان نے زمبابوے میں اکلوتا ٹیسٹ کھیلا اور جیت لیا.

2013میں پاکستان نے زمبابوے میں 2میچزکی سیریز 1-1 سے ڈرا کھیلی،اس کا تفصیلی ذکر اس سے قبل کے مضون میں ہوچکا ہے.

پاکستان کا دورہ زمبابوے،آخری ٹیسٹ سیریز میں رسوائی،مصباح اور یونس کو پھر خوف

اس طرح یہ اب تک 8سیریز ہوئی ہیں.6پاکستان کے نام رہی ہیں،ایک سیریز ڈرا ہوئی ہے اور ایک زمبابوے کے نام گئی جبکہ 17ٹیسٹ میچزمیں سے پاکستان نے 10جیتے،3ہارے ہیں اور 4میچز ڈرا کھیلے ہیں.

یہاں ذکر ہے ،1998 کی اس سیریز کا جس میں زمبابوے نے پاکستا ن کا قلعہ ایسے ہی فتح کرلیا،جہاں انگلینڈ،بھارت،نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا جیسی ٹیموں کو سیریز جیتنے کے لئے 3عشروں سے نصف صدی لگ گئی.یہ کیا اتفاق تھا کہ ٹیم زمبابوے سے ہوم میدانوں میں سیریز ہارگئی تھی،دیکھتے ہیں کہ وجوہات کیا تھیں.

دونوں ممالک کے درمیان نومبر 1998کے آخر میں پشاور میں پہلا ٹیسٹ کھیلا گیا تھاجو زمبابوے 7وکٹ سے جیت گیا.عامر سہیل کپتان تھے،محمد یوسف نے 75رنزکی اننگ کھیلی،اعجاز احمد نے 87 بنائے،سہیل 15،سعید انور 36،انضمام 19اور معین خان نے 15کئے،اظہر محمود نے 11،وسیم اکرم نے 10،مشتاق احمد صفر،وقار یونس 6اور عاقب جاوید ایک رن کرسکے،یہ سب نام اس لئے دیئے ہیں کہ کرکٹ کے نئے شائقین جان لیں کہ یہ پاکستان کی 90 کے عشرے کی بہترین ٹیم تھی.پاکستان نے296 اسکور بنائے،یہ کم نہیں تھے لیکن نیل جانسن کی سنچری بھی زمبابوے کی مدد گار نہ ہوسکی اور وہ پاکستان سے بہت کم اسکور 238پر ڈھیر ہوگئے،وسیم اکرم نے52رنز دے کر 5اور وقار یونس نے78 رنزدے کر 4آئوٹ کئے.

پاکستان نے برتری کے ساتھ اننگ شروع کی،کوئی دبائو نہ تھا لیکن ٹیم 37ویں اوورمیں صرف103پر آئوٹ ہوگئی .یہ پاکستان کا زمبابوے کے خلاف کم ترین اسکور بھی ہے.سعید انور اور وسیم اکرم نے 31،31 رنزکئے،باقی سب ناکام تھے،زمبابوے کے بائولر کا کوئی جادو نہ تھا،سب سے زیادہ وکٹیں ہنری اولنگا نے صرف 4لیں لیکن پاکستانی بیٹسمینوں کا کوئی اور ہی مسئلہ تھا.جواب میں زمبابوے نے 162رنزکا ہدف 3وکٹ پر پورا کرکے میچ 7وکٹ سے جیت لیا.میچ 4دن میں مکمل ہوچکا تھا.

دوسرا ٹیسٹ لاہور میں کھیلا گیا تھا جو خراب موسم کے باعث خاصا وقت متاثر رہا.زمبابوے نے 183اور بناکسی نقصان کے48رنزبنائے جبکہ پاکستان نے 9 وکٹ پر 325کے ساتھ اننگ ختم کی تھی.اس میچ میں معین خان نے کپتانی کی تھی.فیصل آباد کا تیسرا ٹیسٹ کسی بال کے بغیر ہی ختم کردیا گیا کیونکہ موسم ہی خرابی آڑے آئی اور اس طرح پاکستان یہ سیریز 0-1 سے ہارگیا تھا.

پاکستان زمبابوے سے سیریز کیوں ہارا،سیریزکے دوران کپتان تک بدلے گئے،آج عامر سہیل سمیت کئی پلیئرز اپنے پروگرام کرتے ہیں،موقع کی مناسبت سے وہ وجہ بتائیں کہ 1998میں پاکستان پشاور کا پہلا ٹیسٹ کس وجہ سے ہارا تھا جو سیریز کی شکست کا سبب بن گیا،اگر کپتانی وجہ نہیں تھی تو عامر سہیل دوسرے ٹیسٹ میں کپتان کیوں نہ بنے،ہیڈ کوچ کون تھا،وہ بھی ان دنوں بہت بولتے ہیں،وہ بھی بتائیں کہ پاکستان کیوں ہاراتھا.

زمبابوے میں موجود پاکستان کرکٹ ٹیم کے اوپر یہ شکست اب 2021میں ایک دبائو کا درجہ تو ضرور رکھتی ہے کیونکہ حریف ٹیم جیتنے کی تاریخ رکھتی ہے.