محمد نواز نے پی سی بی چیئرمین کی مبارکباد کا لکھا پیغام بچالیا

پاکستان کرکٹ ٹیم کی جنوبی افریقا کے خلاف آخری ٹی 20 میچ میں کامیابی بہت مشکل مشن ثابت ہوئی،92رنز سے 115تک جاتے ہوئے جب اس کی 5وکٹیں گریں اور ہدف مشکل ہوتا گیا تو ہر پلان خراب ہوتا دکھائی دے رہا تھا،ایسا ہی ایک پلان پی سی بی کا بھی تیار کردہ تھا،جس میں پی سی بی چیئرمین احسان مانی کی مبارکباد کا تفصیلی خطبہ شامل تھا،چنانچہ محمد نواز نے آخری لمحات میں پاکستان کو جتواکرا س پیغام کو بچالیا اور پی سی بی نے اتنا تفصیلی پیغام پاکستان کی فتح کے فوری بعد جاری کردیا گیا.ٹی 20 سیریز میں بابر اعظم سیریز اور فہیم اشرف آخری میچ کے ہیرو قرار پائے.

پی سی بی پریس ریلیز کے مطابق جنوبی افریقہ کے خلاف ایک روزہ اور ٹی20کرکٹ سیریزمیں کامیابی پر پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی نے قومی کرکٹ ٹیم کو مبارکباد پیش کی ہے۔ٹی ٹونٹی سیریز میں 1-3 سے جیت کی بدولت عالمی ٹی ٹونٹی رینکنگ میں پاکستان کے پوائنٹس کی تعداد 262 ہوگئی ہے۔ رینکنگ میں چوتھے نمبر پر موجود پاکستان اور پہلے نمبر پر موجود انگلینڈ میں اب صرف 10 پوائنٹس کا فرق رہ گیا ہے۔

یہ ہے پاکستانی بیٹنگ لائن کا کمال،آسان میچ میں ڈرامائی جیت،سیریز بھی اڑالی

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی کا کہنا ہے کہ دورہ جنوبی افریفہ میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے پر وہ قومی کرکٹ ٹیم کو مبارکباد پیش کرتے ہیں، جنوبی افریقہ اپنے ملک میں کبھی بھی آسان حریف نہیں سمجھا جاتا مگر پاکستان نے متاثرکن کھیل پیش کرتے ہوئے پہلے1-2 سے ایک ون ڈے سیریز اور پھر 1-3 سے ٹی ٹونٹی سیریز جیتی۔ بابراعظم نے اپنی پراعتماد کارکردگی کی بدولت خود کو ایک متاثرکن کپتان ثابت کیا ہے، اکتوبر 2019 میں جب انہیں پہلی مرتبہ قومی وائیٹ بال کرکٹ ٹیم کا کپتان مقرر کیا گیا تھا تو اس فیصلے پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا جاتا تھا مگر وہ بورڈ کے اعتماد پر پورا اترے، کوئی شک نہیں ہے کہ وہ اپنی قائدانہ صلاحیتوں کو بہتر بناتے رہیں گے اوران میں پاکستان کا کامیاب ترین کپتان بننے کی قابلیت موجود ہے۔چیئرمین پی سی بی کا کہنا ہے کہ فخر زمان اور محمد رضوان کی نمایاں کارکردگی نے پاکستان کی ٹاپ آرڈر بیٹنگ لائن اپ کو استحکام دیا ہے، جو بہت خوش آئند ہے.انہوں نے مزید کہا کہ وہ بھرپور محنت کرنے پر مصباح الحق اور ان کی کوچنگ ٹیم کے دیگر ارکان کی بھی تعریف کرنا چاہتے ہیں،جنہوں نے ٹیم کی کارکردگی میں بہتری لانےکے لیے سخت محنت کی ۔ یہ ٹی ٹونٹی ورلڈکپ کا سال ہے، ٹورنامنٹ میں شریک ہر ٹیم صرف جیت کے مقصد کو لے کر ایونٹ میں شرکت کرے گی، لہٰذا ہمیں ابھی مزید محنت کرنی ہے اور مستقبل قریب میں انگلینڈ، ویسٹ انڈیز اور نیوزی لینڈ کے خلاف سیریز میں عمدہ کارکردگی کا تسلسل برقرار رکھنا ہے۔