لارڈز ٹیسٹ،برتری کے باوجود کیویز دبک گئے،حیران کن پالیسی،ڈرا کا کھاتہ کھول دیا

لارڈز کرکٹ ٹیسٹ کے 5ویں روز اتوار کو اگر کوئی نتیجہ نہ نکلا تو فیورٹ ٹیم تیسرے دن کی بارش کو کوسے گی لیکن اگر میچ نے کم وقت میں ڈرامائی نتیجہ فراہم کیا تو کسی کو لارڈز کی بارش کا دکھ نہیں رہے گا.

لندن میں جاری 2 میچز کی سیریز کے پہلےٹیسٹ کے چوتھے روز کے اختتام تک میزبان ٹیم بری طرح بد حواس تھی اور ہر اعتبار سے ناک آئوٹ تھی لیکن اس کے اوپنر رائے برنزکی سنچری اور زیادہ وقت بیٹنگ نے میچ ڈرا کرنے کی امیدیں دلادی ہیں،ہفتہ کو جب کھیل ختم ہوا تو نیوزی لینڈ نے دوسری اننگ میں 2 وکٹ پر 62 اسکور کر لئے تھے اور اس کی مجموعی برتری 165 رنزکی ہوگئی تھی.پہلی اننگ میں سنچری بنانے والے ڈیون کونوے23 رنزبناکر پہلا ٹیسٹ کھیلنےوالے رابنسن کا شکار بنے،انگلینڈ نے دوسری بڑی کامیابی بھی ان کی مدد سے لی جب کیوی کپتان کین ولیمسن ایک بار پھر ناکام ہوئے اور 1 رن بناکر ایل بی ہوگئے.ٹام لیتھم 30 اور ویگنار ایک پر کھیل رہے تھے.

لارڈز میں انگلش بیٹنگ لائن کو بڑا جھٹکا،ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کی بڑی خوشخبری

اس سے قبل انگلش ٹیم نیوزی لینڈ کے اسکور 378 رنزکے جواب میں 275 پر آئوٹ ہوئی،اس کے لئے بھی اسے اوپنر رائے برنز کا مشکور ہونا پڑے گا جنہوں نے140پر ٹیم کی 6 وکٹیں گرنے کےباوجود زبردست کھیل پیش کیا،اپبی سنچری مکمل کی،ان کا ساتھ اولی رابنسن نے 42 رنز بناکر دیا،انگلش اور کیوی اوپنر کی اہم بات یہ رہی ہے کہ پہلی اننگ میں نیوزی لینڈ کے اوپنر کونوے نے بھی ایسی ہی مزاحمت کی تھی اور ڈبل سنچری بنائی تھی اور وہ آئوٹ ہونے والے آخری کھلاڑی تھے،اسی طرح انگلش اوپنر برنز نےبھی کلاس دکھائی اور 132 رنزکی اننگ کھیل کر اپنی ٹیم کو یقینی شکست سے بچایا اور وہ بھی آئوٹ ہونے والے آخری کھلاڑی بنے.نیوزی لینڈ کی جانب سےٹم سائوتھی نے25 اوورز 3 بالز میں صرف 43رنز دے کر 6 وکٹیں لیں،جیمسین نے 3 کھلاڑی آئوٹ کئے،کیویز کو پہلی اننگ میں 97 رنزکی لیڈ حاصل ہوئی تھی.

میچ کی منفی بات یہ ہے کہ نیوزی لینڈ نے 140پر 6 وکٹ حاصل کرنے کے باوجود بڑی لیڈ کا موقع گنوادیا ہے اور پھر جب آخر کار اس نے انگلش اننگ لپیٹ دی تھی تو اسے چوتھے روز بیٹنگ کےلئے30 اوورز ملے،اس میں اسے تھوڑی اٹیکنگ کرکٹ کھیلتے ہوئے 3سے 4 کے درمیان اوسط سے بیٹنگ کرکے 100 اسکور کرنے چاہئے تھے،اگر ایسا ہوتا تو اس کی لیڈ 200 سے اوپر ہوتی اور کل 5ویں روز وہ 90منٹ کی بیٹنگ میں 90 یا 100 اسکور کر کےانگلینڈ کو جیت کے لئے300کے قریب کا ہدف دیتے تو میچ آسانی سے جیت سکتے تھے لیکن اب جب کہ اس نے محض 2 کی اوسط سے اسکور کئے اور 30 اوورز ایسے ہی گزار دیئے ہیں،اس سے لگتاہے کہ کیوی کیمپ کسی خوف کا شکار ہے اور یہ 5ویں روز بھی دکھائی دے گا جسکا مطلب یہ ہوگا کہ وہ 3 گھنٹے کھیل کر 100 سے120 اسکور مزید کرے تو انگلینڈ کے پاس ڈرا کرنے کے مواقع زیادہ ہونگے.

لارڈز ٹیسٹ ڈرا ہونے کا مطلب انگلینڈ کی جیت ہوگی کیونکہ 4 روز کے کھیل کے بعد کیوی ٹیم کا واضح غلبہ ہے اور غلبہ والی ٹیم میچ نہ جیتے اور سیریز کو محفوظ نہ کرے تو اس کی دفاعی پالیسی واضح ہوتی ہے.