انضمام الحق کانعمان علی سے اظہارافسوس،کھلاڑیوں کے لئے عید کی فکر

رپورٹ : عمران عثمانی

زمبابوے کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز کے کھیل پر اپنے تبصرے میں انضمام الحق نے کہا کہ ڈبل سنچری کرنا عابد علی کا اعزاز ہے،میں نے کل بھی کہا تھا کہ جو سیٹ ہوجائے وہ لمبی اننگ کھیلے اور عابد نے اس کا فائدہ اٹھایا،مجھے یہ سمجھ نہیں آرہی کہ نعمان کو مبارکباد دوں یا افسوس کروں،انہوں نے اچھی بیٹنگ کی،اسکور کئے لیکن سنچری نہ کرسکے.

انضمام کہتے ہیں کہ کسی بھی ٹیم کے ٹیل اینڈرز اسکور کر رہے ہوں تو یہ وائٹل چیز ہوتی ہے اور اس کی خوشی ہے،جہاں تک پاکستان کی بائولنگ کی بات ہے تو پھر 4 آئوٹ کردیئے،بات یہ ہے کہ وہ ٹیم ہی ایسی ہے ،بس پاکستان ٹیسٹ کھیل رہا ہے.میری خواہش ہوگی کہ پاکستان یہ ٹیسٹ تیسرے روز ہی ختم کردے،اس کا فائدہ ہوگا کہ عید سکون سے گھر آکر کرلیں گے،اگر میچ 5 دن جاری رہے تو پھر ٹیم کے لئے بروقت اپنے گھر پہنچنا مشکل ہوجائے گا.

ٹیسٹ کرکٹ میں میرے جیسے پلیئرز نہیں،عرب امارات کیا کیا کروائے گا،شعیب اختر کی کڑوی باتیں

انضمام کہتے ہیں کہ اس سیریزکی جیت اتنی اہم نہیں ہے لیکن میں پھر بھی بار بار کہوں گا کہ ہمارا اسٹرائیک ریٹ اچھا نہیں ہے،اب اگر ٹیل اینڈر 90پلس کے اسٹرائیک ریٹ سے کھیل سکتا ہے تو بیٹسمین کیوں نہیں کر رہے،ایسی سیریز سے اپنی خامیوں و غلطیوں کو دور کرنا چاہئے،پاکستان نے اس سیریز سے کیا لیا ،یہی کہ بیٹسمین فارم میں آگئے لیکن بہت کچھ نہیں ملا ہے،یہ سیریز پریکٹس کے لئے مل گئی ہے،یہی اچھی بات ہے.

انضمام کہتے ہیں کہ عابد علی کی ڈبل سنچری بھلے زمبابوے کے خلاف ہے لیکن ٹیسٹ کرکٹ میں ڈبل سنچری آسان بات نہیں ہوتی،یہ بڑا اعزاز ہوتا ہے جو کسی بھی پاکستانی بیٹسمین کے لئے بہت ہی اعلیٰ سی بات ہے.امید ہے کہ دیگر بیٹسمین اس معاملہ میں بہتری دکھائیں گے اور اسکور کریں گے.بائولنگ تو خیر سے ٹھیک ہی چل رہی ہے،بس اب چوتھے روز میچ نہیں جانا چاہئے.