بھارت ورلڈ چیمپئن بن گیا،سری لنکا پر جان بوجھ کے ہارنے کے سنگین الزامات بھی لگے

دنیائے کرکٹ میں آج کادن بھی اہم ہے کیونکہ 10برس قبل آج کے دن کرکٹ ورلڈ کپ کا فائنل کھیلا گیا،ایشیا میں ہونے والے دوسرے ورلڈ کپ کی ٹرافی ایشین ملک ہی جیت گیاتھا اورا یسا پہلی بار ہوا تھا،یہ بھی پہلی بار ہوا تھا کہ کوئی میزبان ملک ورلڈ چیمپئن بن گیا.

آج کےدن یعنی 2مارچ 2011کو یہ بھی پہلی بار ہوا تھا کہ ایک پلیئر کی سنچری کے باوجود وہ ملک فائنل ہارگیا تھا.ممبئی میں بھارت اور سری لنکا کے مابین 10ویں ورلڈ کپ کا فائنل بھارت اور سری لنکا کے مابین کھیلا گیا.بھارتی ٹیم مجموعی طور پر دوسری بار چیمپئن بنی تھی اور ایسا بھی اس کے پہلے ٹائٹل جیتنے کے 28برس بعد ہوا تھا.ایم ایس دھونی ونر کپتان تھے اور 1983 کے بعد کپیل دیو کی طرح ورلڈ چیمپئن بننے والے بھارت کے دوسرے کپتان بن گئے.

سری لنکا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کی اور 6وکٹ پر 274رنزبنائے،مہیلا جے وردھنے نے 103کی اننگ کھیلی.بھارت نےگوٹم گھمبیر کے97اور ایم ایس دھونی کےناقابل شکست 91رنزکی مدد سے ہدف10بالیں قبل 4وکٹ پر پورا کرلیا.چھٹا ورلڈ کپ کھیلنے والے سچن ٹنڈولکر فائنل میں صرف 18رنزبناسکے تھے.

گزشتہ سال سری لنکا کے اس وقت کے وزیر کھیل (جب سری لنکا 2011 ورلڈ کپ کے فائنل میں ہارا تھا) نے اپنی ٹیم پر جان بوجھ کر فائنل ہارنے کا سنگین الزام عائد کیا تھا،اس کے بعد حکومت نے تحقیقاتی کمیٹی بنائی،سری لنکا کے کمار سنگا کارا تک پیش ہوئے لیکن سری لنکن ٹیم کو کلین چٹ مل گئی.

ایک اور اعتبار سے بھی یہ یاد گار دن ہے،آسٹریلیا کے ورلڈ چیمپئن کپتان مائیکل کلارک 1981میں آج کے روز پیدا ہوئے ،ان میں اور ایم ایس دھونی میں ایک قدرے مشترک بات یہ بن گئی کہ 2015ورلڈ کپ آسٹریلیا نے جیتا تھا اور اس کے کپتان مائیکل کلارک تھے.مائیکل کلارک بھی اپنے ملک میں اپنی عوام کے سامنے ورلڈ کپ ٹرافی اٹھانے والے پہلے آسٹریلین قائد بنے.