آئی سی سی کا عید کے روز پاکستان کو تحفہ،ٹیسٹ رینکنگ میں جنوبی افریقا کی ریکارڈ تنزلی،آسٹریلیا کو بھی جھٹکا

رپورٹ : عمران عثمانی

انٹر نیشنل کرکٹ کونسل کا عید کے روز پاکستانی ٹیسٹ ٹیم کو بڑا تحفہ،آسٹریلیا کے پائوں سے زمین نکال دی،جنوبی افریقا کے لئے ریکارڈ تنزلی جبکہ ویسٹ انڈیز کو 8 سال بعد کچھ ترقی نصیب ہوگئی ہے،سالانہ ٹیسٹ ٹیم رینکنگ نے انگلینڈ کو فائدہ پہنچایا ہے جبکہ آسٹریلیا اور جنوبی افریقا کو بڑا نقصان ہوا ہے.پاکستانی ٹیم کو 3 ریٹنگ ترقی ملنے کے بعد اگر چہ اس کی رینکنگ میں ذرا بھی فرق نہیں پڑا لیکن مجموعی اعتبار سے بڑا فائدہ ہوا ہے.

عید کے دن آئی سی سی نے ٹیسٹ کرکٹ کی سالانہ اپ ڈیٹ رینکنگ جاری کردی،کچھ ٹیموں کی پوزیشن برقرار رہی جبکہ کچھ کی ترقی و تنزلی ہوگئی ہے،اس سے قبل آئی سی سی نے گزشتہ ہفتوں میں ون ڈے اور ٹی 20 کی سالانہ اپ ڈیٹ رینکنگ جاری کی تھی جس میں بھی بہت کچھ تبدیل ہوا تھا.

جمعرات 13 مئی 2021 کو آئی سی سی کی جانب سے سالانہ بنیادوں پر اپ ڈیٹ کی گئی ٹیسٹ ٹیم رینکنگ کے مطابق بھارتی کرکٹ ٹیم بدستور پہلی پوزیشن پر ہے،بھارتی کرکٹ ٹیم 121 ریٹنگ کے ساتھ پہلے اور نیوزی لینڈ ٹیم صرف ایک ریٹنگ فرق کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے.دونوں کے ایک ایک پوائنٹ میں اضافی ہوا ہے کیونکہ بھارت نے آخری سیریز میں آسٹریلیا اور انگلینڈ جبکہ نیوزی لینڈ نے ویسٹ انڈیز اور پاکستان کے خلاف کامیابی اپنے نام کی تھی.نئی اپ ڈیٹ میں مئی 2020 سے 100 فیصد ٹیسٹ میچز اور اس سے قبل کے 2 سال کے 50 فیصد میچز نتائج کو بنیاد بنایا گیا ہے.اس کے نتیجہ میں انگلینڈ نے آسٹریلیا پر کڑا وار کرتے ہوئے اس سے تیسری پوزیشن جھپٹ لی ہے اور خود 109ریٹنگ کے ساتھ تیسرے نمبر پر آگیا ہے،سالانہ اپ ڈیٹ رینکنگ میں اسے 3 پوائنٹس ملے ہیں کیونکہ اس نے ایک ایشز میں جیت اپنے نام کی تھی،آسٹریلیا کو سال بعد سالانہ اپ ڈیٹ میں 5 پوائنٹس کی کٹوتی کا سامنا کرنا پڑا ہے جس کے بعد اس وقت وہ 108 ریٹنگ کے ساتھ چوتھے نمبر پر چلا گیا ہے.

پاکستان کرکٹ ٹیم کو عید الفطر کے روز آئی سی سی کی جانب سے سالانہ ٹیسٹ رینکنگ میں اچھا تحفہ ملا ہے،اس کے مجموعی پوائنٹس میں 3 ریٹنگ پوائنٹس کا اضافہ ہوا ہے،اس کے باعث اس کی موجودہ ریٹنگ 94 پوائنٹس کی ہوگئی ہے،اگر چہ اس کی نمبر 5پوزیشن میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی لیکن اس میں استحکام اور بہتری ہوئی ہے جو مستقبل میں اسے فتوحات کی صورت میں ترقی کا موقع دے گی .سب سے زیادہ فائدہ ویسٹ انڈیز کو ہوا ہے اور 8 سال بعد وہ پہلی بار کچھ اچھی پوزیشن پر آیا ہے،اسے نمبر 8سے نمبر 6پر ترقی ملی ہے،آخری بار اسکی چھٹی پوزیشن 2013 میں تھی،اس کے پوائنٹس ریٹنگ میں بھی 3 درجہ ترقی ہوئی ہے اور نئی ریٹنگ پوزیشن 84 ہوگئی ہے .سب سے بڑا خسارہ جنوبی افریقا کو ہوا ہے اور وہ اپنی ٹیسٹ تاریخ کی بدترین پوزیشن نمبر 7پر آگیا ہے،اس کی سالانہ ریٹنگ میں 9پوائنٹس کی کٹوتی ہوئی ہے،اس وقت اس کی ریٹنگ پوزیشن 80 پر ہے.

سری لنکا کو 5پوائنٹس کی کٹوتی کا سامنا کرنا پڑا ہے اور 78ریٹنگ کے ساتھ 8ویں،بنگلہ دیش 5درجہ تنزلی کے بعد46 ریٹنگ کے ساتھ 9ویں اور زمبابوے 8درجہ ترقی کے ساتھ 35ریٹنگ کے ساتھ 10ویں نمبر پر ہے.