بنگلہ دیش کےلئے تاریخ رقم کرنے کا بڑا موقع،آسٹریلیاسے پہلا ٹی20 آج

0 23

تجزیاتی رپورٹ : عمران عثمانی
یہ ایک عام بات محسوس ہوگی کہ ٹی 20 فارمیٹ میں بنگلہ دیش اور آسٹریلیا کا مقابلہ ہے،اس لئے کہ پڑھنے اور سننے والے کہیں گے کہ دونوں میں کیا مقابلہ ہے اور اس میں دلچسسی کی کیابا ت ہے اور جن کو یہ بھی علم ہو کہ تاریخ میں ان 2 ممالک کی کبھی باہمی ٹی 20 سیریز نہیں ہوسکی ہے اور یہ بھی کہ دونوں ممالک میں اب تک کھیلے گئے تمام 4 ٹی 20 میچز آسٹریلیا کے نام رہے ہیں،یہ الگ بات ہے کہ چاروں بار یہ مقابلہ ورلڈ ٹی 20 میں ہوا ہے.تو ایسے حالات میں اس میچ سے کیا دلچسپی سوچی جائے گی لیکن
جب بات ہوگی کہ یہ سیریز بنگلہ دیش میں ہونے جارہی ہے.آسٹریلیا کی ٹیم ویسٹ انڈیز میں حال ہی میں 5 میچزکی سیریز واضح اور عبرتناک انداز میں ہاری ہے کیونکہ اکلوتی جیت کے مقابل اسے 4 بڑی شکستیں ہوئی ہیں،ٹیم کے حقیقی کپتان فنچ موجود نہیں ہیں اور کئی اسٹارز بھی نہیں ہیں اور بنگلہ دیش کو ہوم کنڈیشن کا ایدوانٹج حاصل ہے تو کرکٹ فینز سوچ سکتے ہیں کہ بنگلہ دیش اس بار شاید وہ کرجائے جو اس سے پہلے کبھی نہیں ہوسکا ہے.
بنگلہ دیش اور آسٹریلیا
بنگلہ دیش اور آسٹریلیا کے مابین 5 ٹی 20میچزکی سیریز کا آغاز آج 3 اگست 2021 کو ڈھاکا میں ہونے جارہا ہے،جہاں پاکستانی وقت کے مطابق شام 5 بجے پہلا ٹی 20میچ کھیلا جائے گا.آسٹریلیا کی قیادت وکٹ کیپر بیٹسمین میتھیو ویڈ کریں گے،بیٹنگ لائن میں کئی نام موجود نہیں ہیں اور زیادہ تر نئے چہرے ہونگے لیکن بائولنگ لائن تگڑی ہے،جوش ہیزل ووڈ بھی ہیں اور مچل سٹارک بھی اور ایڈم زمپا کی اسپن بھی چل سکتی ہے.ڈھاکا کی پچ اگرچہ اسپنرز کو مدد دے گی لیکن اس سے زیادہ فائدہ حاصل نہیں ہوگا اور موسم بھی مون سون کا چل رہا ہے ہے،اس لئے ڈھاکا میں آندھی اور بارش کی پیش گوئی بھی ہے.خود میزبان ٹیم میں بھی کئی اسٹارز شامل نہیں ہونگے.لٹن داس،تمیم اقبال اور رحیم کا تجربہ میزبان سائیڈ کے ساتھ نہیں ہوگا.
ٹاس اور بیٹنگ،ممکنہ ٹوٹل
ڈھاکا میں ٹاس جیتنے والی ٹیم پہلے فیلڈنگ کو ترجیح دے گی .آسٹریلیا ٹیم بنگلہ دیش کے خلاف 100سے کم اسکور پر بھی ڈھیر ہوسکتی ہے.کرکٹ کی دنیا میں ایک بڑے نام کے طور پر جانے والے آسٹریلین کھلاڑیوں کے لئے یہ دورہ ڈرائونا خواب بن سکتا ہے ،سومیا سرکار،محموداللہ اور شکیب الحسن میں سے کسی ایک کا ہر میچ میں رول پلےکرنا اہم ہوگا.بنگلہ دیش نے اگر آسٹریلیا کو زیر کرلیا تو یہ بڑا کارنامہ ہوگا اور آنے والے ورلڈ ٹی 20کے حوالہ سے اس کی دہشت قائم ہوجائے گی.پہلے بلے بازی کرنے والی ٹیم 160سے 170 تک جاسکتی ہے لیکن مہمان ٹیم کا یہاں اتنا اسکور کرنا آسان نہیں ہوگا.
آئی سی سی ٹی 20 رینکنگ اور آسٹریلیا
آسٹریلیا انٹر نیشنل کرکٹ کونسل کی رینکنگ میں اس وقت 248 ریٹنگ کے ساتھ 5ویں نمبر پر ہے،اس طرح دنیا کی ٹاپ 4 ٹیموں میں اس کا کہیں نام نہیں ہے.انگلینڈ،بھارت،نیوز ی لینڈ اور پاکستان بالترتیب پہلے سے 4نمبر تک ہیں.آسٹریلیا کا یہاں 2میچزکاہار جانا اسے 5ویں سے چھٹے نمبر پر دھکیل دے گا کیونکہ چھٹے نمبر پر موجود جنوبی افریقا 246 ریٹنگ کے ساتھ قریب ہی ہے،آسٹریلیا یہ 5میچز جیت بھی جائے تو بھی اس کا نمبر 5واں ہی رہنا ہے لیکن ایک سے 2 ناکامیاں اسے پستی میں دھکیل دیں گی.
ٹی 20 درجہ بندی میں بنگلہ دیش کا نمبر
بنگلہ دیش کی اس وقت ٹی 20 رینکنگ مایوس کن ہے.بنگلہ دیش اس وقت 222 ریٹنگ کے ساتھ 10ویں پوزیشن پر ہے لیکن وہ تمام5 میچزجیت کر یکدم چھٹی پوزیشن پر آسکتا ہے اور اس کا یہ جمپ نہایت ہی تاریخی ہوگا.وہ اپنے راستہ میں موجود ویسٹ انڈیز، افغانستان،سری لنکا کو پیچھے چھوڑ دے گا اور یہی ہی نہیں بلکہ آسٹریلیا کو بھی 8ویں پوزیشن پر کرتے ہوئے اس سے آگے نکل جائے گا .بنگلہ دیش کا 5میچزمیں جیتنا گویا ناقابل یقین سی بات ہے،اس لئے اس کے لئے یہ منزل آسان نہیں ہوگی.
بنگلہ دیش کی فتح کا مطلب
اس سیریز میں آسٹریلیا کی ہار کا مطلب یہ ہوگا وہ ورلڈ ٹی 20 کی چئمپئن ریس سے باہر ہوجائے گا،ماہرین اسے اس فارمیٹ میں متوقع چیمپئن نہیں مانیں گے جب کہ بنگلہ دیش جیسی ٹیم کو سب کے لئے بڑا ہی خطرہ قرار دیں گے.ایسے میں دیگر ٹیموں کو بھی ریلیف مل سکتا ہے.آسٹریلیا کی ٹیم کا بہر حال ایک نام ہے اور دنیا میں اس کی شکست کو حیرت کی نگاہ سے دیکھاجائے گا.عام طور پر یہ بات کہی جارہی ہےکہ آسٹریلیا کی ٹیم میں اب وہ کاٹ نہیں رہی ہے کہ جس سے اسے نمبر ون سائیڈ کا درجہ دیا جائے.پھر ایک اور معاملہ بھی چل رہا ہے کہ اس سال کے شروع میں کورونا کی وباکے عروج پر آسٹریلین کھلاڑی بھی بھارت میں آئی پی ایل لیگ کھیل رہے تھے ،بھارت میں خوفناک ہلاکتوں کو دیکھ کر آسٹریلیا کے وزیر اعظم نے اپنے کھلاڑیوں کے بارے میں کہا تھا کہ میرا بس چلے تو میں ان کو جیل میں ڈال دوں،پھر ان کھلاڑیوں کو وطن واپسی کے لئے خصوصی طیارے کی اجازت نہیں ملی تھی.یہ سلوک بھی آسٹریلین پلیئرز کو ہضم نہیں ہوا ہے اور ذہنی طور پر وہ اس کی ذلت محسوس کرتے ہیں.
کرکٹ آسٹریلیا نے بنگلہ دیش سے مشاورت کرکے فوری بنیادوں پر یہ سیریز اگست کے شروع میں شیڈول کرلی.7روز میں 5 میچزکھیلے جائیں گے ،اس کے پلیئرز ایک بار پھر آئی پی ایل کے لئے عرب امارات جائیں گے اور لیگ میں حصہ لیں گے لیکن اس سیریز کے بعد سے اگلے ماہ تک ان کو کچھ آرام کا موقع ملے گا.بورڈ نے جنوبی افریقا کے خلاف ملتوی سیریز کو بھی تاحال ری شیڈول نہیں کیا ہے.کورونا کی وبا ان دنوں پر زور پکڑ رہی ہے،ایسے میں اس سیریزکا کامیابی کے ساتھ ہوجانا بھی ایک کارنامہ ہوگا.
ٹائیگرز کے پاس پہلی بار تاریخ رقم کرنے کا بڑا موقع ہاتھ آیا ہے کہ وہ کمزور ٹیم کو اپنے بچھائے جال میں جکڑلے اور کسی نہ کسی طرح ہوم کنڈیشن کا فائدہ اٹھاتے ہوئے یہ سیریز اپنے نام کرلے،ویسے بھی بنگلہ دیش کو اس کے ملک میں ہرانا آسان نہیں ہوتا ہے،ہر بڑی ٹیم کو وہاں جیتنے کےلئے بڑے ہی پاپڑ بیلنے پڑتے ہیں .موسم اس سیریز کو متاثر کرسکتا ہے.
یہ بھی پڑھیں
انگلینڈ کی ایک سیریز ملتوی،دورہ پاکستان بھی خطرے میں

Leave A Reply

Your email address will not be published.