پہلا ٹی20 آج ،وکٹ،موسم کا حوال،پاکستان کی ممکنہ الیون،ریکارڈ ساز میچ ہوسکتا

پاکستان اور زمبابوے کے درمیان 3ٹی 20میچزکی سیریز کا پہلا میچ آج بدھ 21 اپریل کو ہرارے میں کھیلا جائے گا.دونوں ٹیموں کے مابین افرادی قوت،اعدادوشمار و ریکارڈ میں کوئی مقابلہ ہی نہیں ہے.پھر دوسری دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ سال ٹی 20ورلڈ کپ کا ہے اور ہر ٹیم اسی کوسامنے رکھ کر تیاری کررہی ہے لیکن زمبابوے ورلڈ ٹی 20سے باہر ہے اور پھر اگلی اہم بات یہ ہے کہ وہ ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کا حصہ بھی نہیں ہے.سادہ لفظوں میں میزبان ٹیم کے پاس کھونے یا گنوانے کے لئے کچھ نہیں ہے اور یہ بات اسے ہر قسم کے دبائو سے آزاد کر سکتی ہے.

پاکستان کی ایک اور 11 رکنی ٹیم کی ٹی 20میچ سے قبل ہرارے روانگی

زمبابوے کرکٹ کی زبوں حالی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ ہرارے میں گزشتہ 16 ماہ سے کوئی انٹر نیشنل میچ نہیں ہوا اوراس سے بھی بڑھ کر ظلم کی بات یہ ہے کہ ہرارے نے 3سال سے کسی ٹی 20 انٹر نیشنل میچ کی میزبانی نہیں کی ہے ،اتفاق سے آخری میچ بھی یہاں پاکستان نے 3ملکی کپ کے فائنل کا آسٹریلیا کے خلاف کھیلا تھا اور یہ بات 2018کی ہے.زمبابوے کی ٹیم کیسی بھی ہو لیکن عالمی منظر نامہ میں اس کی پیش قدمی اتنی سلو یا کم ہے کہ وہ 3سال سے اپنے شہر میں ٹی 20 انٹر نیشنل میچ نہیں دیکھ سکے ہیں.

پاکستان زمبابوے ٹی 20 سیریز ٹرافی کی رونمائی،بابر اعظم پھر کوہلی کے سر

کرک سین گزشتہ دنوں یہ بھی واضح کرچکا تھا کہ پاکستان اورزمبابوے کے ٹی 20 ریکارڈز میں پاکستان کو سبقت ہے،اس کے متعدد پلیئرزکے پاس ریکارڈز قائم کرنے کے ان گنت مواقع ہیں،محمد حفیظ ایک بڑا ٹائٹل لےکر ڈبل کرائون کے مالک بن سکتے ہیں،بابر اعظم تیز ترین 2ہزار ٹی20 اسکور کے علاوہ اور بھی کئی ریکارڈز اپنے نام کرسکتے ہیں،اسی طرح فخر زمان اور محمد رضوان کے لئے بھی گولڈن مواقع ہیں.

پاکستان زمبابوے سیریز،بابر اعظم کے لئے عجب چیلنج،حفیظ کا منفرد اعزاز،کیا کچھ نیا منتظر

اہم سوال یہ ہے کہ ہرارے کے پہلے ٹی 20میچ میں پاکستان کی کون سی ٹیم کھیلے گی.سنچورین میں جس طرح ٹیم نے آخری میچ جیتا تھا،کہنے کو تو وہ وننگ اسکواڈہے لیکن مڈل آرڈر کی ناکامی اس میچ سمیت پوری سیریزمیں عیاں تھی ،منطقی طور پر شاید پاکستان اس 11 رکنی ٹیم میں چھیڑ چھاڑ نہ کرے لیکن عثمان قادر جنہوں نے زمبا بوے کے خلاف گزشتہ سال ہوم سیریز کے 3میچز میں 8وکٹیں لے کر ٹاپ کیا تھا،انہیں کھلایا جاسکتا ہے.سوال یہ ہوگا کہ وہ کس کی جگہ آئیں گے،ان کا آنا اس لئے بھی بنتا ہے کہ میزبان ملک کے پلیئرز ان کے سامنے نفسیاتی خوف کا شکار ہونگے اور اسپنرز کے سامنے بہتر بھی نہیں ہیں.اس کے لئے آصف علی کا ڈراپ کرنا بنتا ہے لیکن عین ممکن ہے کہ حارث رئوف کو بنچ پر بٹھادیا جائے.باقی نئے پلیئرز دانش عزیز وغیرہ کو موقع آخری میچ میں شاید دیاجائے .

پاکستانی ٹیم میں محمد رضوان،بابر اعظم،فخرزمان،محمدحفیظ،حیدر علی،فہیم اشرف،حسن علی،محمد نواز،شاہین آفریدی ہونگے،ان کے ساتھ عثمان قادر اگر آئیں گے تو حارث رئوف باہر ہونگے یا پھر آصف علی.اس کا فیصلہ پچ دیکھ کر کیا جائے گا.

محکمہ موسمیات کے مطابق موسم میچ کے لئے کلیئر ہے اور وکٹ بھی بیٹنگ کے لئے سازگار ہے.پاکستانی وقت کے مطابق میچ دوپہر 2بجے شروع ہوگا.