مت پوچھیں کہ آسان میچ اتنا دلچسپ کیوں بنادیا گیا،رمیز راجہ کا کٹ شاٹ،تفصیلات حاضر

پاکستان نے ٹی 20سیریز جیت لی.یہ آخری لائن ہے اور یہ ایک بہت بڑی کہانی ہے،ماناکہ یہ جنوبی افریقا کی اے ٹیم نہیں تھی لیکن یقین رکھیں کہ اس میں پاکستان کاکوئی قصور نہیں ہے،ان کو جو ٹیم ملی،انہوں نے ان کو ہرادیا.1-3 کی کامیابی بہت بڑی ہے.
یہ مت پوچھیں کہ یہ میچ اتنا دلچسپ ہوگیا تو کیوں ہوگیا.بیٹنگ پچ پر پاکستان نے بچوں کے میچ کو مشکل سابنادیا ،یہ میچ پاکستان نے اس لئے دلچسپ بنادیا کہ یہ پاکستان کا مسئلہ ہے،ٹاپ آرڈر کے بعد مڈل آرڈر نہیں چل رہی ہے،سیدھی سادھی کہا نی کہ 145 کو مشکل بنادیا،مڈل آرڈر گھبراگئے،دبائو میں آنا اچھی بات نہیں ہے،یہ مڈل آرڈر کا قصور تھا.

انضمام الحق کی جیت کے باوجود 2 بڑی خرابیوں کی نشاندہی،ناکام پلیئرز کا نام لینے سے گریز

رمیز راجہ کہتے ہیں کہ جنوبی افریقا میں جیتنا آسان نہیں تھا،بابر اپنے کیریئر کے بہترین اننگ کھیل گئے،فخر اگر فارم میں رہتے ہیں تو پاکستان کو بہت فائدہ ہوگا.اسی طرح فہیم اشرف نے کمال بائولنگ کی،درمیان میں آکر انہوں نے پھنسایا،محمد نواز اسی طرح کھل کرسامنے آئے،بیٹنگ تھوڑی اور بہتر کرنی ہوگی،پاور ہٹنگ اچھی کرنی ہے،ان کے لئے دورہ اچھا رہا.

پاکستانی ٹیم نے سیریز ڈرا کرنے کی پوری کوشش کی،شعیب اختر کا انکشاف

پاکستان کے لئے بہت ہائی پوائنٹس رہے ہیں،اس دورے میں ایک روزہ سیریز 1-2 اور ٹی 20سیریز کا 1-3 سے جیتنا ہائی پوائنٹس ہے.بابر اعظم بھی بہت بڑا پوئنٹ ہے .پاکستانی ٹیم کو اب ان کمزوریوں سے جان چھڑوانی ہوگی،تب ہی آگے جاکر 145 جیسا قلیل اسکور مشکلات کا سبب نہیں بنے گا.

پاکستان کے سینئرز پلیئر محمد حفیظ اس دورے میں ناکام گئے ہیں اور کھل کراسکور نہیں کرسکے،اسی طرح حیدر علی بھی فلاپ رہے ہیں اور آصف علی کاکردار بھی غیر اہم سا لگا ہے.ان تین پوزیشنز پر پی سی بی منیجمنٹ جب کام کرے گی تو ایک اچھا سیٹ بیٹسمین مڈل آرڈر کو اٹھادے گا .پاکستان نے جنوبی افریقا میں 8 سال بعد ٹی 20 سیریز جیتی ہے اور تاریخ میں یہی درج ہوگا کہ پاکستان فاتح رہا.