فیصلہ کن ٹی 20 آج،پاکستان کا کیا کچھ دائو پر،3 خاص پیغامات،3 بڑے خطرات

تجزیاتی رپورٹ: عمران عثمانی

پاکستان اور جنوبی افریقا کی کرکٹ ٹیموں کے مابین رواں سیریز کا چوتھا و آخری ٹی20انٹرنیشنل میچ آج جمعہ کو کھیلا جارہا ہے،سنچورین میں پاکستانی ٹیم کے لئے 2 باتیں نہایت ہی اہمیت کی حامل ہونگی کہ ہر حال میں فتح اپنے نام کی جائے تاکہ 4میچزکی سیریز 1-3 سے اپنے نام کرکے 3 اہم کام کئے جاسکیں،3 اہم پیغام جاری کئے جاسکیں اور 3 ہی اہم تاثر قائم ہوں.

بابر اعظم کے سکندر اعظم بننےکا ادھورا جشن،کوچز و سینئرز نظر انداز،پی سی بی ہی ذمہ دار

فتح سے پہلا کام یہ ہوگا کہ قومی کرکٹ ٹیم رواں سال ورلڈ ٹی 20 کے حوالہ سے ایک خطرناک ٹیم کے طور پر ابھرے گی.دوسرا کام یہ ہوگا کہ ریٹنگ میں کچھ بہتری ہوگی اور نمبر 4 سے نمبر 3پوزیشن کے مواقع ملیں گے اور تیسرا کام یہ ہوگا کہ قومی کرکٹ ٹیم 2018 کے بعد پاکستان اور عرب امارات سے باہر پہلی بار ٹی 20 سیریز جیتے گی،تو 3 سال بعد کسی تیسرے ملک میں پہلی سیریز کا جیتنا بھی معمولی کارنامہ نہیں ہوگا.

تین اہم پیغام یہ جاری ہونگے کہ بابر اعظم واقعی نمبر ون بیٹسمین بننے کے اہل و لائق ہیں.دوسرا یہ کہ پاکستانی ٹیم تکے سے جیتا نہیں کرتی بلکہ کارکردگی میں تسلسل ہے اور تیسرا پیغام یہ جاری ہوگا کہ پاکستان ٹی 20 کرکٹ کا خطرناک حریف بن گیا ہے اور سیٹ ہوگیا ہے.یہ پیغام معمولی نہیں ہوگا.

تین بہترین تاثر یہ قائم ہونگے کہ بابر اعظم اب ون ڈے کے بعد ٹی 20 کا بھی بہترین پلیئر اور نمبر ون بننے کے لائق ہے.دوسرا یہ پاکستان ٹیم کی سلیکشن و ڈائریکشن بھی درست ہے اور تیسرا یہ کہ ٹیم فتح کے لئے کچھ بھی کرسکتی ہے.

سنچورین میں آج ایک بار پھر پچ اہم ہوگی اور ٹاس جیتنے والی ٹیم پھر فیلڈنگ کو ہی ترجیح دے گی اور اہم بات یہ کہ آج ہدف 220پلس بنانے کی کوشش کی جائے گی،موسم کرکٹ کے لئے آئیڈیل ہوگا،ہلکے پھلکے بادل ضرور ہونگے.میزبان ٹیم میں ایک سے 2 تبدیلیاں ہونگی اور وہ اپنا بائولنگ اٹیک بہتر کریں گے جبکہ پاکستانی ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی ،اب عثمان قادر کو موقع ملنا بھی مشکل ہوگا کیونکہ محمد نواز اپنی اسپن اور بیٹنگ سے کم سے کم اس سیریز میں اچھا تاثر قائم کرچکے ہیں.

پاکستانی اوپننگ اسٹینڈ بھی وہی ہوگا جو پہلے آخری میچ میں تھا،محمدرضوان جنوبی افریقا کے خلاف کھیلے گئے تمام ٹی 20میچز میں 75کی اوسط سے اسکور کر رہے ہیں اور وہ ان کے لئے بڑا خطرہ ہونگے،بابر اعظم بھی فارم میں ہیں،ایک اور بڑی اننگ ان کو ٹی 20 کا نمبر ون پلیئر بناسکتی ہے.اسے طرح فخرزمان نمبر 3 اور محمد حفیظ مڈل آرڈر میں اپنی موجودگی شو کرسکتے ہیں.

جنوبی افریقا کرکٹ ٹیم گزشتہ 2 سال سے کہیں بھی ٹی 20 سیریز جیت نہیں سکی ہے،اس دوران ہاف درجن کے قریب کھیلی گئی تمام سیریز میں اسے ناکامی ہوئی ہے،اس لئے اس کی کوشش ہوگی کہ وہ سیریز بچائے،جیت تو وہ اب بھی نہیں سکیں گے لیکن پاکستان جس نے ایک روزہ ٹرافی کی سیریز جیتی ہے اور وہ حریف سینئرز کی غیر موجودگی میں اپنی ٹرافی کو ڈبل کرنا چاہے گی کیونکہ اس کنڈیشن میں شکست سیریز کو برابر کرے گی،پاکستان کی اہمیت کم ہوگی،بابر کی گزشتہ میچ کی اننگ اپنی افادیت کھودے گی اور سب سے بڑھ کر یہ کہ پاکستانی ٹیم کےحوالہ سے بننے والا موجودہ تاثر کمزور ہوجائے گا.