فیصلہ کن جنگ آج،زمبابوے کے خلاف پاکستان کی فائنل الیون،ٹاس اور میچ کا ممکنہ نتیجہ

رپورٹ وتجزیہ : عمران عثمانی

پاکستان اور زمبابوے کے درمیان فیصلہ کن ٹی 20میچ آج اتوار 25اپریل 2021 کو ہرارے میں کھیلا جائے گا.3میچزکی ٹی 20 سیریز 1-1سے برابر ہے،گزشتہ میچ میں 99پر آئوٹ ہوکر 19رنزسے ہارنے والی قومی کرکٹ ٹیم شدید تنقید کی زد میں ہے.جنوبی افریقا میں محدود اوورز کے دونوں فارمیٹ میں ٹرافی اٹھانے والے بابر اعظم اور ان کے ساتھی میزبان ٹیم کے میچ جیتنے کے بعد قدرے دبائو میں ضرور ہونگے کیونکہ زمبابوے کی یہ کامیابی نہایت ہی آئوٹ کلاس کی تھی جس نے پاکستان کے خلاف تاریخ میں پہلی فتح اپنے نام کی تھی.

تیسرے اور آخری اور فیصلہ کن میچ میں قومی ٹیم کن کھلاڑیوں پر مشتمل ہوگی.موسم کیسا ہوا،پچ کا رویہ کیا ہوگا اور سب سے بڑھ کر ممکنہ نتیجہ کیا ہوسکتا ہے،کرک سین کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ اس نے دوسرے میچ کے حوالہ سے ان باتوں کی جو پیش گوئی کی تھی وہ حرف بحرف درست ثابت ہوئی.تیسرے میچ کے حوالہ سے بھی کوشش ہوگی کہ حقیقت کے قریب رہ کر تجزیہ کیا جائے.

بابر اعظم کے ٹاس جیتنے،فیلڈنگ کرنے،میچ ہارنے کی پیش گوئی 100 فیصد سچ،اب اگلی کہانی بھی جانئے

ہرارے میں آج پھر تھوڑی مشکل پچ ہوگی،اسکور بنانا زیادہ آسان نہیں ہوگا لیکن پاکستانی ٹیم نے اگر بیٹنگ کی تو 160 تک اسکور بن سکتا ہے.ایک اہم سوال یہ ہوگا کہ ٹاس کس کے حق میں جائے گا اور ٹاس جیتنے والا کپتان کیا کرے گا،اس کے جواب سے قبل یہ وضاحت ضروری ہے کہ گزشتہ دونوں میچز کے ٹاس جیتنے والے زمبابوین اور پاکستانی کپتان کے فیصلے غلط ثابت ہوئے تھے.پہلے میچ میں زمبابوے نے ٹاس جیتا اور پاکستان کو کھلایا،اسکور اگر چہ 149بنے تھے لیکن زمبابوے 138 تک جاسکا تھا اور میچ ہار گیا تھا.دوسرے میچ میں بابر اعظم ٹاس جیتے تھے اور زمبابوے کو بیٹنگ دی تھی،میزبان سائیڈ اگرچہ 118کرسکی تھی لیکن گرین کیپس 99پر آئوٹ ہوگئے تو جب دونونں کپتانوں کے فیصلے غلط ثابت ہوئے ہیں تو منطق یہ کہتی ہے کہ ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کی جائے کیونکہ فیلڈنگ کا فیصلہ تو گلے ہی پڑا ہے.چنانچہ کرک سین کا خیال ہے کہ اس بار ٹاس جیتنے والے کپتان پہلے بیٹنگ کو ترجیح دیں گے .

پاکستانی ٹیم سہمے ہوئے چوہوں کی طرح کھیلی، جواب طلبی ضروری،رمیز راجہ پھٹ پڑے

ٹاس ایک بار پھر پاکستان کے حق میں جاسکتا ہے اور پاکستان کی بہر 2صورت شاید پہلے بیٹنگ ہی آجائے .میچ جیتنے کے لئے پاکستان کی پلیئنگ الیون کا انتخاب اہم ہوگا.خیال کیا جارہا ہے کہ قومی منیجمنٹ پوری اسٹرینتھ کے ساتھ میدان میں اترے گی اور اس کے لئے شرجیل خان کو کھلایا جاسکتا ہے،محمد آصف اور حیدر علی دونوں ہی باہر ہونگے.محمد نواز کی ٹیم میں واپسی ہوگی،ایسے ہی شاہین شاہ آفریدی بھی کھلائے جائیں گے جن کو پہلے2میچز میں آرام دیا گیا تھا.تیسری بڑی واپسی آل رائونڈر حسن علی کی ہوگی کیونکہ ان کی بائولنگ وہٹنگ بھی کار آمد ہوتی ہے.

سوال یہ ہے کہ مڈل آرڈر میں کون جائے گا اور اوپنرز کون ہونگے.محمد رضوان کو مڈل میں کھلانے کا تجربہ ناکام گیا ہے،اس لئے وہ شاید اوپنر ہی رکھے جائیں،ان کے ساتھ شرجیل خان ہوسکتے ہیں.فخر زمان ون ڈائون ہونگے.چوتھے نمبر پر کپتان بابر اعظم آسکتے ہیں.5ویں پوزیشن پر محمد حفیظ ہونگے.پھر محمد نواز ہونگے.ان کے بعد حسن علی اور فہیم اشرف ہونگے،شاہین آفریدی اور عثمان قادر بھی ساتھ ہونگے.محمد حسنین اور حارث رئوف میں سے کوئی ایک ہوگا.غالب خیال یہ ہے کہ حارث رئوف لائے جائیں.

یہ پاکستان کی کنٹرول اور مکمل اسٹرینتھ لائن ہوگی،کوئی علم نہیں کہ دانش عزیز کو ہٹا کر حیدر اور آصف میں سے پھر کسی کا خوفناک تجربہ کیا جائے اور یا پھر شرجیل کو فخر کی جگہ لاکر حیدر و آصف میں ایک کھیل اور کھیلا جائے یا پھر نواز کو باہر بٹھا یا جائے،یہ مثالیں غلط بن سکتی ہیں..حریف ٹیم میں بڑی تبدیلی کا امکان کم ہی ہوگا.

ریکارڈز کی بات کی جائے تو بابر اعظم،حفیظ اور عثمان قادر کے پاس بہت کچھ حاصل کرنے کے مواقع ہیں،ان کے ریکارڈز کا ذکر کیا جاچکا ہے جبکہ سب سے بڑے ریکارڈ کی بات کی جائےتو زمبابوے کبھی بھی کسے بڑے ملک کے خلاف باہمی ٹی 20 سیریز جیت نہیں سکا ہے،اس نے اگر پاکستان کو ہرادیا تو یہ دنیائے کرکٹ کا خوفناک اپ سیٹ ہوگا.زمبابوے نے البتہ واحد ٹی 20 میچ میں ویسٹ انڈیز کو 2010 میں ہرایا ہوا ہے.

آئی سی سی ٹی 20 ٹیم رینکنگ میں پاکستان شکست کی صورت میں بھی چوتھے نمبر پر ہی رہے گا اور جیتنے کی حالت میں بھی یہی پوزیشن ہوگی،اسی طرح پلیئرز درجہ بندی میں بابر اعظم کو بڑا فرق پڑے گا،اگر وہ 50سے اوپر اسکور کرگئے تو اپنی دوسری پوزیشن برقرار رکھیں گے اور اگر سنچری کر گئے جس کا امکان کم ہے تو پھر نمبر ون پوزیشن کے امیدوار ہونگے.

پاکستان اور زمبابوے کا فیصلہ کن میچ کون جیتے گا،یہ اہم سوال ہے،اگر پاکستان کو بعد میں بیٹنگ کرنی پڑی توخوف بھی ساتھ ہوگا.زیادہ امکان یہ ہے کہ پاکستان نے اگر اپنی پلیئنگ الیون میں کوئی بڑی غلطی نہ کی تو وہ یہ میچ اور سیریز جیت جائیں گے،کوئی بھی بڑا ایڈونچر بڑی کھائی بن جائے گا جس میں ہیڈ کوچ مصباح سمیت کئی آفیشلز اور کئی پلیئرز ہمیشہ کے لئے گر جائیں گے.