آئی پی ایل پر کورونا کا وار،انگلینڈ کا حیران کن اعلان،جنوبی افریقا بھی میدان میں آگیا

بھارت میں کوروناکیسز مثبت آنے اور پیر 3مئی کا میچ ملتوی ہونے کے بعد انگلینڈ کرکٹ بورڈ بھی میدان میں آگیا ہے.آسٹریلیا نے تو سخت پیغام جاری کیا تھا کہ اس کے پلیئرز کے لئے چارٹرڈ فلائٹ تک بھی نہیں ہے لیکن انگلینڈ نے اس کے برعکس اپنے پلیئرز کے لئے بہتر اعلان کیا ہے.ای سی بی نے کہا ہے کہ ہم اپنے پلیئرز کو اختیار دے رہے ہیں کہ وہ چاہیں تو بھارت میں اپنا قیام جاری رکھیں اور چاہیں تو اسی وقت لیگ چھوڑ کر واپس اپنے ملک آجائیں لیکن اس کے لئے انہیں ایک شرط کا سامنا ہوگا.

انگلینڈ کرکٹ بورڈ کے مطابق ایسے پلیئرز جو فوری طور پر لیگ چھوڑ کر وطن واپس آنا چاہتے ہیں،ان کے لئے ملک کے دروازے کھلے ہیں لیکن انگلینڈ اترتے ہی انہیں 10روزہ قرنطینہ کی قید کاٹنی ہوگی.اب بائیو سیکیور ببل میں موجود انگلش کھلاڑی کورونا ٹیسٹ کلیئرہونے،وہاں سے محفوظ ماحول کے ساتھ خصوصی پرواز کے ذریعہ بھی اگر واپس انگلینڈ جائیں گے تو کووڈ ٹیسٹ کلیئر ہونے کے بعد بھی انہیں 10روزہ قرنطینہ برداشت کرنا پڑے گا.اس اعلان پر فوری رد عمل تو نہیں آیا ہے لیکن انگلش کھلاڑیوں کو بھی احساس ہوگیا ہے کہ انہیں اس کی بھاری قیمت چکانا پڑے گی.

بھارت کی آئی پی ایل لیگ کے میچز ممبئی شفٹ کئے جانے پر غور جاری ہے اور ساتھ میں کچھ کھلاڑیوں کے تحفظات بھی دور کرنے کی کوششیں ہورہی ہیں لیکن اس کے باوجود پیر کو کولکتہ نائٹ رائیڈرز کے پلیئرز کے کووڈ ٹیسٹ کا مثبت آنا یہ بتانے کے لئے کافی تھا کہ آئی پی ایل ایل کا بائیو سیکیور ببل محفوظ نہیں رہا ہے.

حیران کن بات یہ ہے کہ ای سی بی نے واضح کیا ہے کہ وہ اپنے تمام 11پلیئرز کو مجبور نہیں کرے گا کہ وہ بھارت چھوڑدیں.ماضی میں دورہ جنوبی افریقا کے دوران ہوٹل اسٹاف کے رکن کا ٹیسٹ مثبت آنے پر پوری انگلش ٹیم دورہ ادھورا چھوڑ کر وطن واپس چلی گئی تھی.دیکھنا ہوگا کہ انگلینڈ بورڈ کہاں تک معاملہ میں نرمی دکھاتا ہے.

دوسری جانب کرکٹ جنوبی افریقا نے اپنے پلیئرز کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کہا ہے کہ بورڈ اپنے پلیئرز کے فیصلے کے ساتھ ہے،اگر وہ بھارت میں رک کرکھیلنا چاہتے ہیں تو بھی ٹھیک ہے اور اگر واپس آنا چاہتے ہیں تو بھی ان کے ساتھ ہیں اور انہیں اپنے ملک میں فوری واپس لائیں گے.

اپنا تبصرہ بھیجیں