کورونا نے کیوی کرکٹر کو جکڑلیا،بھارتی کھلاڑیوں کے لئے 18 روزہ قید

بھارت میں آئی پی ایل تو ملتوی ہوگئی ہے لیکن آفٹر شاکس جاری ہیں،آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے پلیئرز تاحال اپنے ملک نہیں پہنچ سکے ہیں،ابھی ان کے کھلاڑی واپسی کی فکر کر ہی رہے تھے کہ نیوزی لینڈ کے ایک کرکٹر ٹم سیفرٹ کو کورونا نے جکڑ لیا ہے،ان کا کووڈ 19 ٹیسٹ مثبت آگیا ہے ،اب سیفرٹ کو مقررہ ایام بھارت کے بند ہوٹل میں ہی گزارنے ہونگے لیکن ان پر ستم یہ بھی ہوا ہے کہ ان کے ملک کپتان کین ولیمسن سمیت 4 کھلاڑی بھارت سے مالدیپ منتقل ہوگئے ہیں.

کین ولیمسن کا ساتھی کرکٹرزکے ساتھ مالدیپ منتقل ہونا ٹم سیفرٹ کے لئے کسی بڑے صدمہ سے کم نہیں ہے کیونکہ اکیلے کھلاڑی کے لئے بھارت جیسے ملک میں قیام ایک مستقل ٹینشن ہے،وہاں آئے روز کوروناکے ریکارڈ کیسز رپورٹ ہورہے ہیں،ادیگر کیویز کھلاڑی اب مالدیپ سے اپنے ملک کے لئے روانہ ہونگے.

دوسری جانب انگلینڈ کے سخت قوانین کے باعث بھارتی ٹیم کے کھلاڑیوں کے لئے 18 روزہ قرنطینہ قید ہوگئی ہے.سلیکشن کمیٹی پہلے ہی 20 کھلاڑی فا ئنل کرچکی ہے.اب ان کرکٹرز کو اپنی فیملیز بھی انگلینڈ لے جانے کی اجازت ہوگی لیکن اس کے لئے پہلے بھارت میں 8 روزہ قرنطینہ کاٹنا ہوگا،اس کے بعد انگلینڈ اترتے ہی 10 روزہ قرنطینہ ہوگا.پھر ٹیم نیوزی لینڈ کے خلاف ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل کھیلے گی اور اس کے بعد بھارت کے خلاف 5 ٹیسٹ میچز کی سیریز کے لئے انگلینڈ ہی میں قیام ہوگا،کچھ پلیئرز کائونٹی کرکٹ کھیلیں گے اور کچھ 100 بالز ایونٹ کی طرف جائیں گے،ٹیم نے 2 جون کو لندن کے لئے پرواز پکڑنی ہے.

انگلینڈ کے سابق کپتان کیون پیٹرسن نے بھی وہی بات کی ہے جو مختلف کائونٹیز کی جانب سے دہرائی جارہی ہے کہ بھارت کی ملتوی شدہ آئی پی ایل انگلینڈ میں مکمل کروادی جائے اور اس کے لئے روڈ میپ کا مطالبہ سامنے آیا ہے،اس کے امکانات مسترد نہیں کئے جاسکتے.