کپتان برطرف،پی ایس ایل پر متعدد افراد نفسیاتی مریض بن گئے،سہرا پی سی بی کے سر

عمران عثمانی

پاکستان سپر لیگ 6 کا شیڈول آیا اور نہ ہی ایک فرنچائز کا کپتان ابو ظہبی پہنچ سکا،چنانچہ ابو ظہبی میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز ٹیم اپنے کپتان سرفراز احمد کے بغیر قید ہے،ایسے میں پی سی بی،پی ایس ایل اور پاکستان کی جو عزت افزائی پوری دنیا میں جاری ہے،اس کی نظیر ہی نہیں ملتی ہے.یہ معاملات اب چل ہی رہے ہیں ،اس حالت میں کوئی بھی ایسی ویسی خبر آئے تو اس کا تعلق کسی سے بھی ہو،خیال پی ایس ایل کی جانب جائے گا.

میں یہ بات ایسے ہی نہیں لکھ رہا ہوں بلکہ مثال دے کر بات کروں گا کہ پاکستان اور دنیا بھر میں جتنے بھی کرکٹ شائقین ہیں،صحافی ہیں، وہ لوگ جو سوشل میڈیا پر کرکٹ کے حوالہ سے اپ ڈیٹ بریک کرنے کی ریس میں رہتے ہیں،وہ گزشتہ 15 دن سے اپنے موبائل کے نفسیاتی مرید بن گئے ہیں.وٹس ایپ کی بیپ بجنے کی دیر ہوتی ہے کہ فوری موبائل دیکھا جاتا ہے کہ کہیں پی سی بی کی اپ ڈیٹ تو نہیں،کہیں پی ایس ایل کا شیڈول تو نہیں،کہیں سرفراز احمد جیسا ڈرامہ پھر تو نہیں.میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ عام حالات میں دن بھر کی ایسی درجنوں بیپ کو نظر انداز کیا جاتا تھا لیکن پی سی بی نے ان گزرے ایام میں کرکٹ سے متعلق ہر فرد کو ہر بیپ پر موبائل فون کھولنے کا عادی بنادیا ہے ،دوسرے لفظوں میں نفسیاتی مریض بنادیا ہے.

نفسیاتی مریض کا لفظ میں ایسے ہی نہیں لکھ رہا کیونکہ ہر بجتی بیپ پر جب آپ وٹس ایپ کھولیں گے،آگے سے بنے درجنوں وٹس ایپ گروپس میں ایڈ دوستوں ودیگر افراد کے روٹین کے میسجز پر جب نگاہ پڑے گی تو لا محالہ غصہ آئےگا،دانت پیسنے کو دل کرے گا ،شاید دو چار سخت الفاظ بھی منہ سے نکل جائیں،حالانکہ وہ لوگ اضافی میسجنگ نہیں کر رہے ہونگے،وہ روٹین کے میسجز ہونگے،معمول کی گپ شپ ہوگی جسے ہم میں سے درجنوں بلکہ سیکڑوں افراد مہینہ مہینہ دیکھتے بھی نہیں ہونگے لیکن انتظار کی کیفیت اور سب سے پہلے کی ریس کی وجہ سے اب غصہ بھی آرہا ہوگا اور ناگوار بھی لگ رہا ہوگا،شاید کچھ افراد ان دنوں متعدد وٹس ایپ گروپس سے باہر بھی نکل گئے ہوں.

ڈرامائی تبدیلی،آدھی رات کو سرفرازکا ویزا پھر جاری،آج ابو ظہبی روانگی،میچز کی تاریخیں بھی طے،بریکنگ نیوز

نفسیاتی مریض کا لفظ اس لئے بھی زیادہ مناسب لگا ہے کہ پی سی بی نے گزشتہ کئی راتوں سے آدھی آدھی رات کو بھی پریس ریلیز جاری کرنے کا سلسلہ شروع کررکھا ہے ،چنانچہ بعض افراد تو اب دوگنی اذیت کا شکار ہوگئے ہونگے،موبائل سائلنٹ پر کرتے ہیں تو خبر ہاتھ سے نکلنے کا ڈر،موبائل آن رکھتے ہیں تو معمول کے میسجز کی گھنٹی،چنانچہ آدھی نیند اور آدھا خواب والی بات نے شاید ذہنوں پر اثرا ڈالا ہوگا اورقوت برداشت کم ہوئی ہوگی.یہی حال ان سوشل میڈیا لوگوں کا بھی ہوگا جو ہر لمحہ سوشل میڈیا پر بریکنگ نیوز کے طور پر خبریں شیئر کرتے ہیں،وہ بھی ان دنوں بار بار موبائل فون اور انٹر نیٹ پر ہونگے.

ان حالات میں انٹر نیشنل میڈیا پر یہ خبر کچھ اس طرح چلے کہ کپتان برطرف، نئے کپتانوں کا اعلان تو لا محالہ پہلا خیال پی ایس پر جائے گا کہ کون پیچھے رہ گیا،کون ابو ظہبی کے قرنطینہ میں فیل ہوگیا وغیرہ وغیرہ.

بات افغانستان کی ہورہی ہے کہ اس کے بورڈ نے اپنے ریگولر کپتان اصغر افغان کو برطرف کردیا ہےا ور حشمت اللہ شاہدی کو ون ڈے اور ٹیسٹ ٹیم کی کپتانی دے دی ہے جبکہ ٹی 20کے کپتان کا اعلان ابھی نہیں کیا گیا ہے.

اب اس خبر پر اور کیا تفصیلی بات کریں ،اس کا پی ایس ایل سے تعلق نہیں ہے تو مختصر ذکر ہی کافی ہے،واپس پی ایس ایل پر آتے ہیں .سرفراز احمد رات 11بجے تک ابو ظہبی روانہ نہیں ہوسکے،یکم جون کے آغاز میں چند منٹ باقی ہیں،شیڈول کا تاحا ل علم نہیں ہے اور ہاں ایک بات اور ،اس تحریر کے دوران میرےوٹس ایپ پر 29 مرتبہ بیپ کی آوازآئی ہے اور یقین کریں کہ مجھے اس سے بھی زائد مرتبہ وٹس ایپ دیکھنا پڑا ہے .آ پ کا کیا حال ہے؟ اورآپ کا کیا خیال ہے؟