بابر اعظم رینکنگ بہتری میں سلو کھیل گئے،حسن نے لاج رکھ لی،320 بڑا اسکور؟

حسن علی کے آخری اوورز میں بنائے گئے تیز ترین رنز نے پاکستان کو مجموعہ 300سے اوپر کردیا،گرین شرٹس نے پروٹیز کو فتح کے لئے 321 رنزکا ہدف دیا ہے،ایک موقع پر یہ بڑا کریڈٹ صرف اور صرف حسن علی کا جاتا ہے.بابر کی اننگ دیکھ تو صاف لگ رہا تھا کہ وہ اپنے لئے اور آئی سی سی ون ڈے رینکنگ کی پہلی پوزیشن کے لئے کھیل رہے ہیں،بہر حال پروٹیز کو سیریز جیتنے کے لئے 321 اور پاکستان کو 10وکٹیں درکار ہیں.

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے اپنی مخصوص انداز کی اننگ کھیل کر پاکستانی ٹوٹل کو دھچکا لگادیا،حسن علی اگر 19ویں اوور میں 25 اسکور نہ بٹورتے تو آپ خود حساب لگالیں کہ پاکستان 300بھی نہ کرپاتا.سنچورین میں تیسرے اور فیصلہ کن میچ میں پاکستان نے اچھے آغاز کے باوجود بڑے ٹوٹل کا موقع گنوادیا.پہلی وکٹ پر 112 اور دوسری وکٹ پر 106کی شراکت ہو.35 اوورز میں اسکور 200 سے اوپر ہو اور 9وکٹیں ہاتھ میں ہوں تو 350سے 380 کا مجموعہ بنتا تھا لیکن امام کے 73بالز پر57 رنز بابر کے 49ویں اوور تک 77 بالز پر 77رنز جہاں اس کا سبب بنے ،وہاں بعدکے بیٹسمینوں کی ناکامی نے ایک بار پھر بڑے اسکور کا موقع ہاتھ سے نکال دیا. آخری وکٹ پر حسن نے بابر کے ساتھ مل کر 63 رنز کی جو شراکت قائم کی اس سے پاکستان کو باعزت ٹوٹل تک رسائی ملی.

اس سے قبل فخر زمان نے شاندار بیٹنگ کا سلسلہ جاری رکھا اور مسلسل دوسری سنچری بنائی،وہ104 بالز پر 101 کر کے گئے. محمد رضوان پھر ناکام گئے اور صرف2ہی کرسکے جبکہ واپسی کرنے والے سرفرا احمد بھی 13ہی کرسکے،فہیم اشرف ایک اور محمد نواز 4رنزکے مہمان بنے.پاکستان نے 3وکٹیں درمیان میں اوپر تلے گنوائیں.آخر میں حسن علیکے 11بالز پر بنائے گئے 32رنزنے کچھ بلے بازوں کی خود غرضی پر پردہ ڈال دیا.بابر 82بالز پر 94 رنزپر آئوٹ ہوئے،یہ بھی انہوں نے آخری اوور میں 17رنز بنائے،پاکستان نے 7 وکٹ پر320اسکور کئے.کیشو مہاراج نے 45رنز دے کر 3 اور ایڈن مارکرم نے 48رنز دے کر 2وکٹیں لیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں