ٹی 20ورلڈ کپ سے قبل ہی بھارت میں نئی جنگ چھڑ گئی،آج انگلینڈ سامنے،رمیز کی فاتح ٹیم

بھارت بمقابلہ انگلینڈ،پہلا ٹی 20میچ،احمد آباد،شام ساڑھے 6بجے،پاکستانی وقت.

بھارت میں ورلڈ ٹی 20 سے قبل ہی جیسے ورلڈ کپ شروع ہوگیا ہے،انگلینڈ اور بھارت کی ٹی 20 سیریز کے آغاز کا وقت کیا آیا ہے کہ جیسے دونوں ممالک کے میڈیا و سابق کرکٹرز میں ٹی 20 ورلڈ کپ کی جنگ چھڑ گئی ہے،حالانکہ میگا ایونٹ کے آغاز میں ابھی 8ماہ باقی ہیں لیکن بات پھر وہی ہے کہ ماحول نہ بناکر کھیلے بھی تو وہ کھیلنا بھی کیا ہوا.انگلش کرکٹ ٹیم جسے بھارت میں 4میچزکی ٹیسٹ سیریز میں 1-3 کی عبرتناک شکست ہوئی اور اسی وجہ سے وہ ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل سے بھی باہر ہوگئی ہے لیکن اب نئے کپتان اوئن مورگن کی قیادت میں نئے فارمیٹ کےلئے جمعہ 12 مارچ کو میدان میں اترے گی.احمد آباد میں انگلش ٹیم کی حالیہ اچھی یادیں وابستہ نہیں ہیں،آخری دونوں میچز میں بڑی شکست ہوئی ہے.5میچزکی اس ٹی20 سیریز کی اہم بات یہی ہے کہ سال کے آخر میں ہونےوالے ورلڈ ٹی 20 کے لئے بڑا خطرہ بننے کا موقع ہوگا،دھاک بٹھانے کی جنگ ہوگی اور کیوں نہ ہو کہ اس کے بعد آخری جنگ تو اسی ایونٹ میں ہونی ہے.انگلش اسکواڈ تمام بڑے ناموں کے ساتھ میدان میں اترے گا ،میزبان ٹیم سابقہ پالیسی کے تحت اسپنرز پر بھی انحصار کرے گی.

انگلش ٹیم میں جوفرا آرچر یامارک ووڈ میں سے ایک ہونگے.جیسن رائے،جوس بٹلر،ڈیوڈ میلان،جونی بیئرسٹو،بین سٹوکس،ائون مورگن اور معین علی کے بعد بھی اچھے ہارڈ ہٹرز موجود ہونگے،اسی طرح ویرات کوہلی بھی واضح کرچکے ہیں کہ انکے اوپنرز کون ہونگے اور ٹیم کن پر بھروسہ کرے گی.روہت شرما،کے ایل راہول،کوہلی وغیرہ کے ساتھ بیٹنگ و بائولنگ کا اچھا کمبی نیشن سیٹ ہوگا.بھارت اور انگلینڈ کا باہمی ریکارڈ بھی دلچسپ ہے،دونوں نے 7،7میچزجیتے اور 7،7ہارے ہیں،آخری کچھ عرصے میں بھارتی ٹیم کا غلبہ رہا ہے.ویرات کوہلی کے لئے اس سیریزمیں ایک بڑا اعزاز منتظر ہے،وہ 3ہزار ٹی 20انٹرنیشنل اسکور مکمل کرنے سے صرف 72رنزکی دوری پر ہیں،اگر ایسا کرگئے تو یہ کارنامہ سر انجام دینے والے پہلے کھلاڑی ہونگے.

بھارت انگلینڈ ٹی 20سیریز کو اتنی اہمیت کیوں مل رہی ہے،اسکی صا ف سی وجہ ہے کہ یہ سال ٹی 20ورلڈ کپ کا ہے،دونوں یہ ثابت کریں گے کہ وہی چیمپئن بننے کے لائق ہیں جبکہ ٹی 20 رینکنگ کی بھی اچھی جنگ ہوگی.اس وقت انگلینڈ 275 ریٹنگ کے ساتھ پہلے نمبر پر ہے،ایک روزہ کرکٹ کا ورلڈ چیمپئن ہے،ڈبل کرائون کا متمنی ہے.بھارت268کے ساتھ دوسرے،آسٹریلیا 267کے ساتھ تیسرے نمبرز پر ہیں.260کے ساتھ پاکستان کا چوتھا نمبر ہے.اب اس سیریز کے متوقع نتائج دیکھیں تو پوزیشن میں بھی رد وبدل بنتا ہے،اس لئے بھی طبل جنگ بجا ہے.پہلی پوزیشن کے لئے بھارت کو کم سےکم 4میچز جیتنے ہونگے.2-3 کی فتح سے اسے پہلا نمبر نہیں ملے گا.بھارت پانچوں میچ جیتے تو انگلینڈ پہلی پوزیشن سے تیسری پر چلا جائے گا.اسی طرھ اگر انگلش ٹیم 2-3 سے جیتے توپوزیشن موجودہ ہی رہے گی لیکن انگلش ٹیم نے اگر پانچوں میچ جیتے تو بھارت لڑھک کر پاکستان کے قریب آجائے گا لیکن اس کا نمبر تیسرا ہی ہوگا،اس لئے بھی یہ سیریز ٹی20 ورلڈ کپ کے تناظر میں اہمیت اختیار کرچکی ہے.

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان رمیز راجہ بھی اس اہم سیریز کے موقع پر پیچھے نہیں رہے ہیں ،انہوں نے اپنے آفیشل یو ٹیوب چینل پر تازہ ترین تبصرے میں کہا ہے کہ پہلی مرتبہ ایسا محسوس ہورہا ہے کہ بھارت نے آئی پی ایل کی بنیاد پر سلیکشن کی ہے،نئے چہرے ہونگے،بھارت کے سسٹم کو بھی مدد ملے گی.19میں سے 9پلیئرز ایسے ہیں جو ٹیسٹ کھیل کر آرہے ہیں،یہ بات کوہلی کے لئے بھی اچھی ہے.راہول ٹیواٹیا کی تلوار دیکھنے لائق ہے،یہ بیٹنگ آل رائونڈر ہیں،یہ کریز پر جب آتے ہیں تو دل باغ باغ ہوجاتا ہے.اکسر پٹیل،ایشان کشن بھی اعلیٰ کھیلتے ہیں،ان کی بھی بھر پور سلیکشن ہے.انگلینڈ کو ناک کے چنے چبوانے کی صلایت اس ٹیم کے پاس موجود ہے.