ایشیا کے 3 ممالک انگلینڈ میں ،سری لنکا پھر ہارگیا، پروٹیز کی 1 رن سے جیت،رمیز کا انکشاف بھی ساتھ

0 8

ویسٹ انڈیز کو نہایت غیر متوقع شکست کاسامنا، جنوبی افریقا نے 5میچزکی سیریز میں 1-2 سے برتری لے لی،سینٹ جارج میں کھیلے گئے سیریز کے  ایشیا کے 3 ممالک انگلینڈ , تیسرے میچ میں مہمان ٹیم نے سخت مقابلہ کے بعد ایک رن سے جیت اپنے نام کی.ویسٹ انڈین ٹیم 167رنزکے جواب میں 166رنز کرسکی،اس کی تفصیل آخر میں آئے گی،اس سے قبل ایک اور بات کہ
پاکستان کرکٹ کے حوالہ سے کوئی بات ہو یاعالمی سطح کی،بریکنگ نیوز اس وقت تک رہتی ہے کہ جب تک کسی ایک کے پاس ہو،مثال کے طور پر پیسی بی چیئرمین احسان مانی کے دوبارہ چیئرمین بنائے جانے کی بات ہو یا ورلڈ ٹی 20 کے متحدہ عرب امارات اور عمان میں منتقل ہونے کی ،خبر اس وقت تک بریکنگ ہوتی ہے جب کسی کو اس کا علم نہ ہو،اب ورلڈ ٹی 20 کے عمان میں جانے کی بات کرک سین 5 جون کو کرچکا تھا،اس کی تصدیق جون کے آخر میں ہوئی ہے تو بریکنگ کیا ہوگی،اگر ہوگی بھی تو ایک دن کے لئے ہوگی مگر پاکستان کے سابق کپتان رمیز راجہ اب بھی اسے بریکنگ سمجھ رہے ہیں،یہی وجہ ہے کہ اپنے آفیشل یو ٹیوب چینل پر رمیز راجہ نے کہا ہے کہ
بریکنگ نیوز
بریکنگ نیوز کی جانب چلتے ہیں کہ ورلڈ ٹی 20 عرب امارات کے ساتھ عمان منتقل ہوگیا ہے،عمان ایک دلچسپ جگہ ہوگی کیونکہ کسی کو علم نہیں ہے کہ وہاں کرکٹ کیسی ہوتی ہے.توقعات سے ہٹ کر بھی معاملات ہوسکتے ہیں لیکن جہاں تک تعلق ہےیو اے ای کا تو وہ اوپن ہے بلکہ پلیئرز کے لئے گھر کی کھیتی بن چکی ہے.یہاں بہت کچھ ہوتا ہے ،اس لئے پلیئرز کو علم ہے کہ وہاں کیسے کھیلنا ہے.بھارت کے لئے بھی عرب امارات بہترچوائس ہوگا.
ایشیا میں اسپنرز کا کردار
پوری دنیا کو علم ہےکہ ایشیا میں اسپنرز کا کردار اہم ہوتا ہے،یہاں کسی بھی ملک میں کرکٹ ہوگی تو اسپنرز کی اہمیت بڑھے گی،اب رمیز راجہ نے بھی یہی انکشاف کیا ہےکہ ہر ٹیم کو اب اسپنرز کی سلیکشن پر توجہ کرنا ہوگی،بیٹسمین بھی وہی منتخب کرنے ہونگے جو اسپن کو اچھا کھیلیں.اچھے اسپنرز اور اسپنرز کو اچھا کھیلنے والے بہتر چوائس ہونگے.پھر گرم موسم ہوگا،اپچز بہتر کرنی ہونگی،وقت کے ساتھ پچز بہتر ہوتی جاتی ہیں.اب اسپنرز کے لئے جب پچز بہتر ہونگی،کنڈیشنز سازگار ہونگی تو یہ طے ہوگیا کہ ایشین ممالک کو اس کا فائدہ ہوگا.رمیز راجہ نے یوں کہا ہے کہ ایشین بلاک اس سے مدد لیں گے.گیم پلان بھی اہم ہوگا جبکہ دیگر معاملات بھی اچھے سیٹ کرنے ہونگے. 
پاکستان نے وہاں پی ایس ایل کھیل لی،ماضی کی ساری کرکٹ ان پچز پر کھیلی ،ساتھ میں کنڈیشنز کا بھی علم ہے،اسی طرح بھارتی پلیئرز ورلڈ ٹی20سے قبل آئی پی ایل کھیل کر اچھی پریکٹس لے لیں گے لیکن دیکھنے کی بات یہ ہوگی کہ غیر ملکی ٹیمیں وہاں کیسے سیٹ ہوتی ہیں.اسپنرز کا رول جتنا ببھی اچھاہو لیکن ٹی 20 فارمیٹ میں کم وقت کے لئے ہوتا ہے،اس لئے اسپنرز کے اچھے اسپیل بھی بعض اوقات زیادہ مفید نہیں رہتے ہیں لیکن سابق پاکستانی کپتان رمیز راجہ نے ایشین بلاک کو فیورٹ قرار دے دیا ہے اور اسپنرز کے لئے آئیڈیل جگہ قرار دی ہے.یہ بات اپنی جگہ ٹھیک ہے کہ جیسے ایشیائی ٹیموں کو باہر کی دنیا میں کھیلتے ہوئے مشکل پیش آتی ہیں تو عین اسی طرح ہی ایشیائی وکٹوں پر انگلینڈ وغیرہ بھی سیٹ نہیں ہوپاتے ہیں،اب انگلینڈ سری لنکا پہلےمیچ کی مثال ہی لے لیں کہ ٹی 20 سیریز میں کلین سویپ کی ذلت ے بعد سری لنکا شکستوں کے گرداب سے نہیں نکل سکا ہے،انگلینڈ نے اس کے خلاف پہلا ایک روزہ میچ نہایت ہی آسانی کے ساتھ5 وکٹ سے جیت لیا.
ایک میچ کی سٹوری
چیسٹرلی سٹریٹ میں کھیلے گئے میچ میں مہمان ٹیم پورے اوورز ہی نہ کھیل سکی اور 43ویں اوور میں صرف 185پر ڈھیر ہوگئی.ابھی کپتان کوشال پریرا نے 73 اور ہاسارنگا نے 54رنزکی اننگز بھی کھیلیں ،ٹیم کا اسکور ایک موقع پر 3 وکٹ پر صرف 145 تھا لیکن ان میں سے ایک کے جاتے ہی 7وکٹیں اسکور میں صرف 40رنزکا اضافہ کرسکیں .8کھلاڑی ڈبل فیگر میں نہ جاسکے،اس سے بڑی ناکامی اور کیا ہوگی.کرس واکس نے 18 رنزدے کر 4 اور ڈیوڈ ویلی نے 44رنزکے عوض 3 وکٹیں لیں .  سری لنکا کی بڑی کامیابی یہ تھی کہ اس نے انگلینڈ کے گھر میں اس کے 4 پلیئرز صرف 80پر شکار کرلئے،ٹاپ آرڈر کے جانے کے بعد انگلش ٹیم کے لئے یہ جیت مشکل ہونی چاہئے تھی لیکن سری لنکا کے بائولرز اس ابتدائی کامیابی کاکا فائدہ نہ اٹھاسکے اور 35ویں اوور میں 185سے زائد اسکور بنواکر یہ میچ 5 وکٹ سے ہارگئے،انگلینڈ کو 3میچزکی سیریز میں 0-1کی برتری مل گئی ہے.
ہاف سنچری مکمل
اس کامیابی کے ساتھ انگلینڈ نے بھی ورلڈ کپ سپر لیگ پوائنٹس ٹیبل پر اپنے نمبر ز کی ہاف سنچری مکمل کرلی ہے،وہ ایسا کرنے والی دوسری ٹیم بنی ہے،اس سے قبل بنگلہ دیش نے 50پوائنٹس مکمل کئے تھے لیکن انگلینڈ نے اس فتح کے ساتھ بہتر نیٹ رن ریٹ کی وجہ سے پہلی پوزیشن محفوظ کر لی ہے،اس طرح انگلینڈ کے مشن میں یہ تمام میچز جیتنا ہے اور پھرپاکستان کے خلاف بھی تینوں میچز جیتکر پوائنٹس کی سنچری مکمل کرنا ہے.سری لنکا کے لئے خطرناک بات یہ ہے کہ ورلڈ کپ سپر لیگ میں یہ اس کا 7واں میچ تھا،اکلوتی جیتکے ساتھ وہ پوائنٹس ٹیبل پر 13ویں اور آخری نمبر پر ہے،یہ سلسلہ اگرایسے ہی جاری رہا تو اس کے لئے کم بیک کرنا مشکل ہوگا،جب ایسا ہوگا تو اس کا ورلڈ کپ 2023 میں براہ راست کوالیفائی کرنا بھی مشکل ہوجائے گا.
پاکستان 40 پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر
پوائنٹس ٹیبل پر پاکستان 40 پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے،پاکستان کے لئے انگلینڈ میں کم سے کم ایک میچ جیتنا ضروری ہوگا تاکہ نقصان کم سے کم ہو.انگلش پچز کے یہی مسائل ہیں کہ جن سے ایشیائی ٹیمیں پریشان ہوتی ہیں،اتفاق سے اس وقت ایشیاکی 3 کرکٹ پاور طاقتیں انگلش سر زمین پر ہیں،ایک جانب 1996 ورلڈ کپ کے چیمپئن سری لنکن ہیں،دوسری جانب 1992 ورلڈ کپ کے چیمپئن پاکستان،تیسری جانب 2 بار ورلڈ کپ بلکہ آئی سی سی کے تمام گلوبل ایونٹس کے چیمپئن بھارتی کھلاڑی بھی وہاں موجود ہیں.  بھارتی ٹیم پہلے نیوزی لینڈ سے ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کا فائنل ہارچکی ہے اور اگست میں انگلینڈ سے5 میچزکی ٹیسٹ سیریز کے لئے تیاری کر رہی ہے لیکن اسے ایک ناکامی انگلش پچز پر ہوچکی ہے،سری لنکا کی ٹیم انگلینڈ سے مسلسل چوتھا میچ ہاری ہےاور پاکستانی ٹیم کا بھی کوئی علم نہیں کہ کیا پرفارم کرے گی لیکن انگلینڈ کا ایک ہی سیزن میں 3 ایشیائی ممالک کی میزبانی کرنا بڑی بات ہے،اسی طرح اگر وہ تینوں کے خلاف کامیاب رہا تو یہ دوسری بڑی بات ہوگی جو ایشین بلاک کی طاقت کے خلاف جائے گی. ادھر ویسٹ انڈیز میں جاری 5میچزکی سیریزکے تیسرے میچ میں جنوبی افریقا نے ویسٹ انڈیز کو سخت مقابلہ کے بعد 1رن سے ہرادیا،میزبان ٹیم کو آخری 12بالز پر 19رنزدرکار تھے لیکن وہ یہ نہیں کرسکے.ربادا نے آخری اوور اچھا کیا .پروٹیز نے 8وکٹ پر 167 جبکہ ویسٹ انڈیز نے 7وکٹ پر 166کئے،میزبان ٹیم کی اننگ میں 48بالیں ڈاٹ تھیں،مطلب 8اوورز میں سنگل تک نہیں لیا گیا.ورلڈ ٹی 20 کا سال ہے اور ویسٹ انڈیز دفاعی چیمپئن ہے لیکن اس کے لئےخطرے کا الارم بج گیا ہے.

Leave A Reply

Your email address will not be published.