Cricket Pak Sri

کپتان کی تبدیلی،یہ پی سی بی کی بڑی نالائقی ہوگی اگر۔۔۔راولپنڈی ایکسپریس نے کیا وارننگ دی

عمران عثمانی

راولپنڈی ایکسپریس کی پاکستان کرکٹ بورڈ کو سخت وارننگ،مشروط نالائق قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اظہر علی کے ساتھ زیادتی ہوئی ہے لیکن یہ بھی ان جیسے نفیس آدمی کا کمال ہے کہ اسے بلا کر کپتانی دیتے ہیں ،واپس لیتے ہیں ،پھر دیتے ہیں اور پھر لیتے ہیں،وہ خاموش رہتا ہے،نیا کپتان بابر اعظم ہے،اسے اب ٹیسٹ کی کپتانی بھی مل گئی ہےاسے بہت بہت مبارک ہو لیکن میں پاکستان کرکٹ بورڈ پر واضح کرنا چاہتا ہوں کہ اب کپتان بنایا ہے تو 6سے 8 ماہ بعد تبدیل مت کرنا،اسے کامیاب کریں،ٹیم سیٹ کرنے دیں اور مستقل کپتان کے ساتھ اچھی ٹیم بناتے جائیں،پھر اسےاٹھا کر باہر مت کریں۔
بابر نے اظہر علی کو تھینک یو بول دیا،کپتان بننے پر خوش
شعیب اختر کہتے ہیں کہ یہ پاکستان کرکٹ بورڈ کی بڑی نالائقی ہوگی کہ بابر اعظم کو کپتان بناکر پھر اسے 8ماہ میں تبدیل کیا ،وائٹ بال کرکٹ کے لئے سرفراز بہتر کپتان تھا لیکن اسے ہٹادیا گیا،اب ایسا مت کریں۔اظہر علی گرمی نہ کھائیں،اپنے 100ٹیسٹ مکمل کریں ،8500رنز تک ہدف بنائیں۔
اظہر عکی کی سلطنت تباہ،پاکستان کا نیا ٹیسٹ کپتان مقرر،کرک سین کا2 ماہ پرانا تجزیہ سچ ثابت
شعیب کہتے ہیں کہ عثمان قادر نے بتادیا کہ وہ ٹیلنٹڈ ہیں،یاسر شاہ اور شاداب کے لئے الارم بن سکتے ہیں لیکن سب کو ساتھ رکھیں۔ٹیم اچھی ہونی چاہئے۔
شعیب نےبابر اعظم کو چند نصائح بھی کی ہیں کہ بابر کو مبارک ہو،تینوں فارمیٹ کے کپتان بن گئے،لوگوں کے ہاتھوں میں مت کھیلنا،اپنے فیصلے خود کرنا،نیوزی لینڈ کے خلاف سیریز ہوگی،اسے جیتیں۔بورڈ بھی اچھا سلوک کرے کیونکہ تبدیلی کا بار بار کا ڈرامہ حقیقی تنقید کا راستہ کھول دے گا۔
پرابلم ینگسٹرز نہیں،کپتانی ہے،شعیب اختر کا نیا سنسنی خیز انکشاف،پی سی بی کو بھی چٹکی
پاکستان کے سابق فاسٹ بائولر شعیب اختر کہتے ہیں کہ میں مستقبل میں پاکستانی ٹیم و کپتان کوا چھا دیکھنا چاہتا ہوں۔جیسے بورڈ آتے ہیں،ویسے ہی کپتان بدل جاتے ہیں،یہ روش بدلنا ہوگی۔
پاکستانی پیسر نے بھارتی کپتان ویرات کوہلی کے اوپر جاری تنقید پر بھی خیال آرائی کی کہ وہ بچہ کی پیدائش کی وجہ سے دورہ آسٹریلیا کے پہلے ٹیسٹ کے بعد وطن واپس آجائیں گے۔
شعیب اختر کہتے ہیں کہ یہ بحث چل رہی ہے کہ کیا بھارت سے پہلے ان کی فیملی اہم ہے؟
کیا انہیں پہلا ٹیسٹ بھی چھوڑ دینا چاہئے؟
شعیب اختر کہتے ہیں کہ 2008میں انہوں نے ڈیبیو کیا،انہوں نے 12 سال میں کوئی وقت نہیں چھوڑا،انہوں نے 70کے قریب سنچریز بناڈالیں،یہ محض لڈو کھیلتے ہوئے نہیں بنائیں تو جب انکی اہلیہ کو بچہ کی پیدائش کے موقع پر ان کی ضرورت ہے توتب ہی وہ چھٹی پر جارہے ہیںتو میرے خیال میںانہیں چھٹی پر جانا چاہئے۔
بھارت میں ان پر تنقید ہورہی ہے،ویرات کوہلی کے بغیر بھارت جیت سکتا ہے یا نہیں ،انہیں جیتنا چاہئے،یہ تنقید غلط ہے ،میرے خیال میں کوہلی کو چھٹی کرنی چاہئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں