پاکستان کرکٹ ورلڈ چیمپئن پلیئرکے سپرد،آج سے نیا آغاز،کیا کچھ متوقع

0 68

عمران عثمانی کی رپورٹ

پاکستان کرکٹ کی چیئر آج سے گھومنے جارہی ہے۔قومی کرکٹ کی باگ دوڑ ورلڈ چیمپئن ٹیم کے ممبر رمیز راجہ کے ہاتھ ہوگی۔پیر 13 ستمبر 2021 کو وہ گورننگ بورڈ اجلاس،چیئرمین پی سی بی انتخاب کے موقع پر چارج سنبھال لیں گے۔رمیز راجہ پاکستان کی اس ٹیم کے ممبر ہیں جس نے 1992 ورلڈ کپ جیتا تھا۔یہ اس حوالہ سے ایک نئی بات ہوگی۔پاکستان کرکٹ کا مکمل کنٹرول ورلڈ چیمپئن ٹیم کے رکن کے سپرد ہوگا۔اطلاعات ہیں کہ یاد گار موقع پر رمیز راجہ نے پرانے ساتھیوں کو بھی بلالیا ہے۔یہ الگ بات ہے کہ اس ٹیم کے کپتان اس وقت وزیر اعظم ہیں۔نائب کپتان جاوید میاں داد شاید نہیں آئیں گے۔ممکنہ طور پر اکثر پلیئرز نہیں جائیں گےسوال یہ ہے کہ کیا یہی حقدار تھے کہ انہیں بلایا جاتا۔رمیز راجہ نے اگر قومی پلیئرز کو عزت دینی ہے۔ان سے رائے لینی ہے تو بہتر ہوتا کہ وہ تمام بڑے قومی ،لیجنڈری ہیروز کی لسٹ بناتے۔سب کو دعوت نامے جاری کرواتے۔

رمیز راجہ چیئرمین بنتے ہی کیا کرنے والے

پی سی بی کے اگلے چیئرمین رمیز راجہ آج عہدہ سنبھالنے کے بعد روایتی پریس کانفرنس کریں گے۔اس میں انہوں نے وہی باتیں کرنی ہیں جو کہ وہ اپنے یوٹیوب چینل پر کرتے آئے ہیں۔کرک سین نے چند روز قبل لکھا تھا کہ رمیز راجہ کم سے کم یہ اعلان ضرور کریں کہ کسی کے ساتھ کوئی اختلاف نہیں ہے۔وہ میرٹ پر فیصلہ کریں گے۔اس کے مطابق جس کو ساتھ چلانا ہوا۔ضرور چلائیں گے۔محمد یوسف،محمد حفیظ و دیگر پلیئرز کے حوالوں سے وہ اب تک جو بھی کہتے رہے تھے۔وہ ماضی تھا۔آج عہدہ الگ ہے۔ذمہ داری بھی الگ ہے۔دیکھتے ہیں کہ رمیز راجہ اس حوالہ سے کیا اعلان کرتے ہیں۔

ڈومیسٹک کرکٹ،بورڈ حکام اور ٹیم منیجمنٹ کا روڈ میپ

یہ بھی دیکھنا ہوگاکہ رمیز راجہ پاکستان ڈومیسٹک کرکٹ،پاکستان ٹیم منیجمنٹ اور بورڈ میں بیٹھے پرانے لوگوں کے بارے میں کیا فیصلے جاری کرتے ہیں اور ان کا اطلاق کب سے ہوتا ہے۔چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان کے حوالہ سے بھی بہت کچھ دیکھنا ہوگا۔یہ دعوے کئے گئے ہیں کہ وہ بھی فارغ ہوجائیں گے۔ایسا آسان نہیں ہے۔پی سی بی کے انٹر نیشنل سطح پر جاری متعدد معاملات میں وسیم خان کا اہم رول ہے۔دیکھنا ہوگا کہ مستقبل قریب میں انضمام الحق اور عامر سہیل کے ساتھ ساتھ وسیم اکرم سے کیا معاونت لی جاتی ہے۔کرک سین ذرائع کے مطابق رمیز راجہ اپنے نئے سیٹ اپ میں اپنے دور کے ساتھی پلیئرز کو بھی رکھیں گے۔ڈومیسٹک کرکٹ کی ذمہ داریاں تقسیم ہوسکتی ہیں۔اسی طرح اور بھی بہت کچھ نیا ہوگا۔اختیارات تقسیم کرکے کام کی رفتار تیز ہوگی۔ملک کے اہم ترین کرکٹ سنٹرز کی پچز فوری تبدیل ہونگی۔اسی طرح ایسوسی ایشنز اور کلب کرکٹ کی فعالیت کے لئے نیاماڈل متعارف ہوگا۔یہ بھی ممکن ہے کہ ملک کی ریجنل کرکٹ سطح پر ہر جگہ ایک سابق لیجنڈری کرکٹر دکھائی دے۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے حوالہ سے اہم فیصلے

ورلڈ ٹی 20 سر پر ہے۔رمیز راجہ بطور چیئرمین پی سی بی پاکستان اور نیوزی لینڈ،اسی طرح پاک انگلینڈ سیریز کو سب سے پہلے اپنے آفس میں بیٹھ کر قریب سے دیکھیں گے۔اس کے بعد ٹی 20 ورلڈ کپ بھی ہے۔ٹی 20 ورلڈ کپ سے قبل غیر ملکی کوچ ہوگا،ثقلین مشتاق ہونگے اور یا پھر مزید اضافہ ہوگا۔کرک سین نے جب تحقیق کی تو علم ہوا ہے کہ ورلڈ ٹی 20کے لئے پاکستانی ٹیم کے ساتھ ایک بیٹنگ مینٹور بھیجا جاسکتا ہے اور اس کے لئے کچھ پلیئرز سے رابطہ ہوا ہے۔فی الحا ل انضمام الحق فیورٹ دکھائی دے رہے ہیں۔رمیز راجہ آج پہلے اپنا منشور،روڈ میپ یا پلان دیں گے۔اس کے ساتھ ہی 20 ستمبر تک کچھ ہنگامی فیصلے ظاہر ہونگے۔یہ فیصلے وہ گزشتہ کئی دنوں میں کرچکے ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.