پاکستان نیوزی لینڈ میں سب کچھ ہارگیا،شان،حارث اور عابد کے شرمناک رنز،بائولرز فلاپ،جائزہ رپورٹ

عمران عثمانی
Image By Twitter
نیوزی لینڈنے پاکستان کے خلاف دوسرا کرکٹ ٹیسٹ بھی جیت لیا ہے،کرائسٹ چرچ ٹیسٹ کے چوتھے روز ٹیم اپنی دوسری اننگ میں صرف 186پر ڈھیر ہوگئی۔اننگ اور 176رنزکی شکست نے کیویز کو 3 اہم چیزیں دلوادیں۔سیریز 0-2 سے جیت لی گئی۔ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ میں ٹاپ پوزیشن،آئی سی سی ٹیسٹ رینکنگ میں پہلا نمبرحاصل کرلیا۔
پاکستانی بیٹنگ لائن نہ صرف دوسری اننگ میں بلکہ پوری سیریز میں ناکام گئی۔دوسری جانب کیوی ٹیم نے دونوں میچز میں ہر شعبہ میں کلاس دکھائی۔کین ولیمسن 2میچز میں 129سے زائد کی اوسط سے 388رنزکئے،ہنری نکولز 2میچزمیں 224 اور محمد رضوان 202رنزبناکر تیسرے نمبرپر رہے۔فہیم اشرف 186رنزکے ساتھ چوتھے نمبر پر آئے۔اظہر علی نے 173،فواد عالم نے 129 اور ڈیرل مچل نے 102رنزکئے۔دونوں ممالک کی جانب سے اور کوئی بھی بیٹسمین 100 اسکور نہیں کرسکا۔راس ٹیلر کا اسکار 3 اننگز میں 94 اور ٹام لیتھم نے 90رنزکئے۔عابد علی نے 2میچز کی 4اننگز میں 76اسکور کئے۔حارث سہیل کے 4اننگز میں 28 اسکور تھے۔شان مسعود 2میچزکی 4اننگز میں 10رنزکرسکے۔پاکستان بیٹنگ لائن کی ناکامی اکا اندازا اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ ٹاپ آرڈر ز کا مجموعی اسکور کین ولیمسن سے کم رہا۔
بائولنگ میں کیل جیمسین 2میچزمیں 16وکٹوں کے ساتھ پہلے نمبر پر رہے۔ٹرینٹ بولٹ نے 9 اور ٹم سائوتھی نے 6وکٹیں لیں۔شاہین آفریدی 6وکٹ کے ساتھ پاکستان کے پہلے اور لسٹ میں چوتھے نمبر پر رہے۔عباس اور نسیم شاہ کی 4،4 اوریاسر شاہ وفہیم اشرف کی 3،3وکٹیں رہیں۔
نیوزی لینڈنے پاکستان کو دونوں شعبوں میں آئوٹ کلاس کردیا۔
پاکستانی اننگ میچ کے چوتھے ہی روز80ویں اوور اور دن کے 68ویں اوور میں سمٹ گئی۔اظہر علی اور ظفر گوہر 37،37رنزبناکر ٹاپ پر رہے۔عابد علی 26،حارث سہیل 15 اور فواد عالم
16رنزکرسکے۔کپتان رضوان نے10 اور فہیم اشرف نے 28 کی اننگز کھیلیں۔سب سے زیادہ گیندیں اظہر علی نے 98 اور عابد علی نے 77 بالز کھیلیں،دونوں نے 175بالز 63 اسکور کئے۔
نیوزی لینڈ کی جانب سےکیل جیمسین کامیاب ترین بائولر رہے،انہوںنے48رنز دےکر 6وکٹیں حاصل کرلیں،ٹرینٹ بولٹ نے 43رنز دے کر 6وکٹیں لیں۔جیمسین نے میچ میںکیریئر بیسٹ 117رنز دے کر 11 شکار اپنے نام کئے اور مین آف دی میچ رہے جبکہ کیوی کپتان کین ولیمسن کو سیریز کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔
میچ میں پاکستان نے 297 اور 186 رنزکئے جبکہ نیوزی لینڈ نے 6وکٹ پر 659رنزاسکور کرکے اننگ ڈکلیئر کی۔
نیوزی لینڈ کے دورے میں قومی کرکٹ ٹیم نے ٹی 20 سیریز 1-2 سے ہاری جبکہ ٹیسٹ سیریز میں 0-2سے شکست ہوئی۔پاکستان کی یہ مسلسل تیسری ٹیسٹ سیریز کی ناکامی ہے جبکہ ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ میں پاکستانی پوزیشن مزید نیچے چلی گئی ہے اور ٹیم فائنل کی ریس سے باہر ہے۔آئی سی سی ٹیسٹ درجہ بندی میں ٹیم کی 7ویں پوزیشن ہے لیکن ویسٹ انڈیز سے فاصلہ کم ہوتا جارہا ہے اور 5پوائنٹس کے فرق رہ جانے کے بعد اب ٹیم کسی بھی وقت 8ویں نمبر پر جاسکتی ہے۔ایسی کنڈیشن میں پی سی بی کے لئے ٹیم میں تبدیلیاں ناگزیر ہیں لیکن سوال یہ ہےکہ نیوزی لینڈ کی ناکام پرفارمنس کو کس حد تک بنیاد بنایا جائے گا،یہ موقف بھی دیا جائے گہ کیویز کے دیس میں ایشیائی بیٹسمین ہمیشہ مشکلات کا شکار رہتے ہیں.بھارتی ٹیم بھی گزشہ سال انہی دنوں میں وہاں سیریز ہار گئی تھی.

اپنا تبصرہ بھیجیں