شعیب اختر کی عمران خان ،پی سی بی اور مصباح پر گولہ باری،نئے کوچ کی تقرری کا دعوٰی

عمران عثمانی

پاکستان کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق فارغ ہوچکے. نئے ہیڈ کوچ کی تقرری کی جاچکی. فوری تقرری کیوں نہیں ہوئی. اس میں بھی ایک راز ہے. ابھی بتاتا ہوں .
راولپنڈی ایکسپریس نے پی سی بی ایوانوں کو اڑا کر رکھ دیا.وزیر اعظم پاکستان، پی سی بی چیئرمین سمیت پورے بورڈ پر شدید تنقید کرتے ہوئے عہدیدارن کو ایوریج لوگ اور مصباح کو مڈیاکر قرار دے دیا.
شعیب اختر نے اپنے یو ٹیوب چینل پر کہا ہے کہ پی سی بی میں ایوریج لوگ بیٹھے ہیں. ایوریج لوگ ایوریج کوچ ہی لائیں گے. یہ سب نوکریاں بچانے آئے ہیں. کوچز کو بھی تنخواہ کی فکر ہے. پاکستان کرکٹ کا بیڑا غرق کرنے یا ہونے کا ان کو کوئی غم نہیں ہے. شعیب نے کہا ہے کہ وزیر اعظم پاکستان کو بورڈ کے لئے احسان مانی ملے انکی کیا اہمیت یا کیا کردار وخدمات ہیں. عمران خان کے ہوتے ہوئے کرکٹ کا بیڑا غرق ہونا ہے تو پھر یہ ٹھیک کب ہوگی. بندر بانٹ مچائی ہوئی ہے. وقار یونس جب مصباح کے انڈر کام کریں گے تو یہی کچھ ہوگا. پھر اگر کوئی ان کی بات نہیں مانتا تو بولتے کیوں ہیں. کس نے بولا تھا کہ مصباح کے نیچے عہدہ قبول کرو.
ماضی کے تیز ترین بائولر کہتے ہیں کہ ان سب کی چھٹی ہونے والی ہے. پی سی بی نے یہاں کمیٹی کمیٹی کا چکر چلایا ہوا ہے.
گھن چکر.گلی محلے کی کمیٹیاں. آج تیری باری تے کل اس کی باری.اندازا کریں کہ محلے کی کمیٹی کی طرح کرکٹ چلائی جارہی ہے. یہ کمیٹی بکواس ہے. یہ اس لئے بنائی گئی ہے تاکہ اس کے کندھے پر رکھ کر بندوق چلائی جائے. کرکٹ کمیٹی بورڈ کی لائن پر ہی چلتی ہے اسکے خلاف نہیں جاتی.بورڈ میں موجود نا اہل لوگوں کو اپنا آپ بچانے کے لئے مڈیاکر درکار ہوتے ہیں. میں اس کمیٹی کو نہیں مانتا .
شعیب اختر نے انکشاف کیا ہے کہ میں آپ کو کنفرم خبر دے رہا ہوں کہ مصباح کی فراغت کا فیصلہ کب کا ہوچکا. بس ایک خاص وجہ سے تھوڑی تاخیر ہوئی. پی سی بی نے اینڈی فلاور کے ساتھ معاملات طے کر لئے ہیں. وہ فوری اس لئے نہیں آئے کہ انکا پی ایس ایل فرنچائز سے معاہدہ ہے. پہلے وہ اپنے لیگ والے پیسے بنائیں گے اور پھر پی سی بی کا حصہ بن جائیں گے. فلاور مکمل طور پر اپنی ٹیم لائیں گے. یہ دائیں بائیں کے لوگ فارغ ہوجائیں گے.اسی طرح وہ میڈیکل ٹیم بھی اپنی بنائیں گے .یہ لولے لنگڑے ڈاکٹر ز گھر جائیں گے. پھر 6 یا 7 نکمے کرکٹرز بھی فلائٹس میں نہیں بیٹھ سکیں گے.

اپنا تبصرہ بھیجیں