خلیفوں کا دوسرا ٹیسٹ،گرین وبلیک کیپس میں ایک ایک تبدیلی،مزید دلچسپ کہانی

عمران عثمانی

پاکستان کرکٹ ٹیم میں کچھ خلیفے ہیں اور کچھ برج الخیلفہ. یہ ایسے ہیں جو ہردور میں کسی نہ کسی شکل میں موجود ہوتے ہیں.خلیفوں کا یہ تسلسل وقت کے ساتھ مسلسل چل رہا ہے.
اب پیسر محمد عباس کو ہی دیکھ لیں کہ گزشتہ 12 ٹیسٹ میں 23 وکٹیں.
کیا پڑھا آپ نے ؟یہ کوئی معمولی جملہ نہیں ہے .دوبارہ دوسری طرح عرض ہے کہ
پاکستان نے 2 سال میں 11 ٹیسٹ کهیلے. چنانچہ
عباس کی 2 سال سے زیادہ کی پرفارمنس ہے. 23 وکٹیں.
یہ خلیفے یا برج الخلیفے والی بات نہیں کہ کس بنیاد پر موصوف مسلسل کھیل رہے ہیں.
اسپیڈ اتنی ہے کہ سلپ تک کیچ کی شکل میں بال نہیں پہنچتی اور پرفارمنس کا عالم یہ ہے کہ 12 ٹیسٹ میچز سے وہ فی ٹیسٹ 2 وکٹ نہیں لے سکے.
نیوزی لینڈ کے خلاف اتوار 3 جنوری سے شیڈول ٹیسٹ میں وہ کس حیثیت اور کس بنیاد پر سلیکٹ ہونگے؟
جملہ سخت ہوگیا؟
کیوں نہ ہو. ایوریج جب فی وکٹ 39 اور اسٹرائیک ریٹ 100 کا ہوتو کیا جملے بنتے ہیں؟
انگلینڈ میں ناکامی کے بعد اب نیوزی لینڈ میں بھی یہی حال جاری ہے.
کرائسٹ چرچ کی پچ پیسرز کے لئے سازگار ہوگی. اول تو عباس کی سلیکشن نہیں بنتی. اگر بنتی ہے تو پھر ہر حال میں میچ وننگ پرفارمنس درکار ہوگی اگر نہیں تو امام الخلیفہ کو ان کی سلیکشن پر فل اسٹاپ لگانا ہوگا.
آخری اطلاعات کے مطابق پاکستانی ٹیم میں ایک تبدیلی ہوگی. یاسر شاہ کی جگہ اسپنر ظفر گوہر کو کهلائے جانے کا امکان ہے اس کے علاوہ ٹیم میں شاید ہی تبدیلی ممکن ہو. باقی وہی ٹیم ہوگی. اتفاق سے نیوزی لینڈ میں ایک تبدیلی ہوگی. ان فٹ نیل ویگنار کی جگہ اسکواڈ کا حصہ بننے والے میٹ ہنری حتمی الیون میں آئیں گے.
پاکستان کرکٹ ٹیم کے لئے ڈرامائی پچ تیار ہے. پیسرز کے لئے سازگار ہوگی. میچ کے اکثر دنوں میں موسم ابر آلود ہوگا. بادل اور ہوا کے ساتھ گیند مزید سوئنگ ہوگا. عباس کے لئے یہ آخری مگر گولڈن چانس ہوگا یہاں ناکامی کا مطلب کیریئر ختم سمجھا جائے گا.اسی طرح نسیم شاہ بھی اگر ناکام ہوتے ہیں تو پھر یہ تھنک ٹینک اور ٹیم منیجمنٹ کے لئے شرمندگی کی سند بن جائیں گے کیونکہ گزشتہ سال مائیکل ہولڈنگ میں انگلینڈ سیریز کے دوران اپنے تبصرے میں کہا تھا کہ 16 سال کی عمر میں ٹیسٹ کیپ دینا،پھر پالش اور گروم کئے بنا کھلانا کرکٹر کو برباد کرنے کے مترادف ہے.
پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان اتوار کی صبح 3 بجے شروع ہونے والے میچ کے لئے فواد عالم اور اظہر علی کو ذمہ دارانہ کردار ادا کرنا ہوگا. حارث سہیل کو بھی اپنی ذمہ داری نبھانی ہوگی. کیویز اپنے ملک میں تو ناقابل شکست ہوتے ہی ہیں لیکن گزشتہ 7 سیریز سے بھی نہیں ہارے . یہ فتح ان کو آئی سی سی ٹیسٹ رینکنگ میں نمبر ون بنادے گی اور ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کے فائنل میں بھی پہنچاسکتی ہے.
کرائسٹ چرچ میں پاکستان 2016 میں اکلوتا ٹیسٹ ہارا ہوا ہے جبکہ نیوزی لینڈ یہاں 7 میں سے 5 فتوحات ایک شکست اور ایک ڈرا کا شاندار ریکارڈ رکھتا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں