بلیک کیپس،13جنوری 1930 کو ڈیبیو ٹیسٹ میں شکست،2021میں پہلی بار نمبر ون

عمران عثمانی
Image By Twitter
نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کی کیا بات ہے اور کیا اتفاق ہے۔91 برس قبل آج کے دن ٹیسٹ کرکٹ کامایوس کن آغازشکست کے ساتھ کیا تھا،ڈیبیو ٹیسٹ کا دوسرا دن 13 جنوری 1930 تھا،کرائسٹ چرچ میں اسے انگلینڈ نے 2 دن کے اندر شکست دے دی تھی۔کوئی بیٹسمین 50 تک بھی نہ پہنچ پایا تھا۔
اٰایک صدی ہونے میں صرف 9 سال باقی رہ گئے لیکن 2021 کا جنوری کا یہ دن نیوزی لینڈ کرکٹ کی تاریخ کے لئے اس لئے سنہرا بن جائے گا کہ ٹیسٹ کرکٹ کی91ویں سال میں وہ پہلی بار عالمی رینکنگ کی نمبر ون ٹیم بنے ہیں۔
کامران اکمل کی آج سالگرہ،یادگار سنچریز،شاندار پرفارمنس ایک جواب کی متلاشی
نیوزی لینڈ نے رواں ماہ پاکستان کے خلاف ٹیسٹ سیریز جیت کر یہ اعزاز تاریخ میں پہلی بار اپنے نام کیا ہے۔کہاں 91برس قبل پہلا ٹیسٹ 2 دن ہی کھیل پائے تھے اور کہاں 91برس بعد آج اس کے کھلاڑی اچھی سی اچھی ٹیم کو 2دن میں ناک آئوٹ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔
کیویز ٹیم تاریخ کی پہلی ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ جیتنے کے امیداور بھی بن سکتے ہیں ،اس وقت وہ فائنل کے مضبوط امیدوارہیں۔
بلیک کیپس اب تک 446ٹیسٹ میچز کھیل چکے ہیں۔105فتوحات،175 ناکامیاں ہیں جبکہ 166میچ ڈرا کھیلے ہیں۔
کیوی کپتان کین ولیمسن نے 13 جنوری سے ایک روز قبل ٹیسٹ پلیئرز رینکنگ میں ویرات کوہلی کو پچھاڑ کر دوسری بہترین پوزیشن اپنے نام کر لی ہے،اس اعتبار سے بھی کیویز کے لئے یہ یہ یادگار ماہ اور یادگار وقت چل رہا ہے۔اس مین چار چاند اگلے 8دن میں اس طرح لگ سکتے ہیں کہ بھارتی ٹیم آسٹریلیا سے گابا ٹیسٹ ہارجائے تو کیویز کے دوسرے نمبر پر آنے کے امکانات ہوجائیں گے۔ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ پوائنٹس ٹیبل پر پہلی بار اس کی دوسری پوزیشن بنے گی۔
نیوزی لینڈ نے پاکستان کے خلاف 60 میچز کھیل رکھے ہیں،14جیتے ہیں،25میں ناکامی ہوئی ہے اور 21 میچز ڈرا کھیلے ہیں.سب سے زیادہ 105میچز انگلینڈ کے خلاف کھیلے اور صرف 11جیتے ،48ہارے ہیں.46میچز ڈرا کئے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں