بابر اعظم تحقیقاتی ایجنسی سے کیوں بھاگ رہے،ایک اور ون ڈے منسوخ،وژڈن کا کرکٹ آسٹریلیا کو تھپڑ

رپورٹ،عمران عثمانی
ٰٰImage By oyeyeah
پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم کےلئے انجری سے نجات سکون کا باعث بنی ہے یا نہیں لیکن ایک اور مسئلہ انہیں پریشان کئے ہوئے ہے،ایسا لگتا ہے کہ جنوبی افریقا کے خلاف ہوم سیریز سے پہلے بھی وہ ذہنی دبائوکا شکار رہیں گے،پاکستان نے ان کے بغیر نیوزی لینڈ کے پورے دورے میں مشکلات محسوس کیں اور ٹیم کی بیٹنگ لائن مسلسل ہچکولے کھاتے رہی ہے لیکن ا ب اگر جنوبی افریقا کے خلاف بھی وہ نہ چل سکے تو ان کے لئے بڑے مسائل ہونگےاور پاکستانی ٹیم بھی بھنور میں پھنس جائے گی۔
کسی کو یاد ہو تو بابر اعظم کے ٹیم کے ہمراہ نیوزی لینڈ لینڈ کرتے ہی لاہور کی ایک خاتون نے ان پر متعدد الزامات عائد کئےتھے۔لاہور کی مقامی عدالت میں ابتدائی سماعت بھی ہوئی تھی۔
بابر اعظم اس وقت لاہور میں ہیں اور پی سی بی نے انکی ٹریننگ کرتے ہوئے ویڈیو بھی جاری کی ہیں ،بابر کرکٹ پچ پر جانے کو بے چین ہیں تو خاتون کا کیس بھی ان کے تعاقب میں ہے۔اسی سلسلے میں ایف آئی اے سائبر کرائم نے انہیں بیان کے لئے بھی طلب کرلیا ہے،اب ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ بابر فوری طور پر جاتے اور اپنی صفائی پیش کرتے کیونکہ جھوٹے الزامات وہ بھی اس قدر سنگین ہوں کہ ان کی وجہ سے عزت دائو پر لگ جائے،انہیں فوی طور پر دھویا جاتا ہے لیکن بابر نے سائبر وننگ سے پہلی کال پر ہی پیش ہونے کی معذرت کرلی اور موقف اختیار کیا کہ وہ تو بہت مصروف ہیں،چنانچہ دستور کے مطابق بابر نے ان کے ہاں چائے پینے کی دعوت کو اگلے ہفتہ تک ٹال دیا ہے۔
اب دیکھنا یہ ہوگا کہ بابر اگلے ہفتہ پیش ہوتے ہیں اور یا پھر جنوبی افریقا کے خلاف سیریز کی تیاری کے لئے بائیو سیکیور ببل میں داخل ہونے اور وہاں سے نہ نکلنے کا جواز پیش کریں گے۔
کورونا نے متحدہ عرب امارات کا تیسرا ایک روزہ میچ بھی منسوخ کروادیا ہے،یہ میچ آج 14 جنوری کو ہونا تھا لیکن دونوں ٹیموں نے اس میچ کو بھی نہ کھیلنے میں عافیت ہی جانی ہے،اب 4میچز کی سیریز کا آخری میچ بچا ہے جو 16جنوری کو شیڈول ہے،اس بار کوئی کورونا ٹیسٹ رپورٹ نہیں ہوا ہے لیکن دوسرے میچ سے قبل تک سامنے آنے والے مجموعی طور پر 7کیسز نے سیریز قریب ختم ہی کردی تھی،پہلا میچ آئرلینڈ نے جیت لیا تھا،متحدہ عرب امارات سے16جنوری تک 4 ایک روزہ میچز کھیلنے کے بعدآئرش ٹیم نے 21 جنوری سے افغانستان کے خلاف محدود اوورز کی سیریز کھیلنی ہے۔
کرکٹ کے معروف ادارے وژڈن کےایڈیٹر نے آسٹریلین کرکٹ ٹیم کی قلعی کھول دی ہے اور ایسی بات کردی ہے کہ جس کے بعد باقی کچھ نہیں بچتا۔آسٹریلیا بگ تھری کا سرگرم رکن ہے لیکن اپنے ہی گروپ میں شامل جب بھارت کا سامنا کر نا پڑا تو روایتی ہتھکنڈوں اور گھٹیا شرارتوں سے باز نہیں آئے ہیں۔سڈنی ٹیسٹ کے دوران ٹم پین بھارتی بیٹسمین ایشون سے تلخ کلامی کرتے پائے گئے جبکہ اسٹیون اسمتھ نے دوسرے بیٹسمین کا بیٹنگ گارڈ خراب کرنے کی کوشش کی،ملک کے تماشائی بھی اپنی ٹیم کے ساتھ مل گئے اور انہوں نے بھارتی کرکٹرز کے خلاف نسل پرستانہ جملے بولے۔
وژڈن کے ایڈیٹر لورینس بوتھ نے اس ساری صورتحال پر دلچسپ تبصرہ کیا ہے اور کہا ہے کہ
یہ آسٹریلیا کرکٹ ٹیم ہی ہے جو ایک دن برا سلوک کرتی ہے،حریف ٹیم کے ساتھ منفی رویہ اپناتی ہے اور اگلے روز سوری کرتی ہے،یہ اسی رویہ کا تسلسل ہے جو کیپ ٹائون ٹیسٹ میں 2018کےآغاز میں آشکار ہوا تھا جب پوری ٹیم بال ٹیمپرنگ کرتی پکڑی گئی تھی۔
کرکٹ کے معروف ادارے کے ایڈیٹر کے یہ الفاظ کرکٹ آسٹریلیاکو زمین بوس کرنے کے لئے کافی ہیں اور اگر یہ رویہ آگے بھی جاری رہا تو اخلاق کے ساتھ ساتھ یہ ٹیم کارکردگی میں بھی زوال کا شاخسانہ بن جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں