انگلینڈسری لنکا کا پہلا ٹیسٹ آج،36 سالہ مختصر مگرڈرامائی کہانی،نئے میچ کا احوال،پیش گوئی

عمران عثمانی
IMage By indiatoday
کہانی 1982 سے شروع ہوتی ہے اور 2018میں اس کا آخری چیپٹر درج ہوا تھا جب دونوں ممالک میں آخری ٹیسٹ سیریز ہوئی تھی۔اس کا مطلب ہے کہ تاریخ 18 جمع18 یعنی 36 سالہ پرانی ہے۔اس دوران 34 ٹیسٹ میچز کھیلے جاسکے،ان میں سے 15 انگلینڈ کے نام رہے تو قریب آدھے 8سری لنکا کے حصے میں آئے اور 11میچز ڈرا ہوئے۔نیا چیپٹر درج ہونے کو ہے،جمعرات 14 جنوری 2021 کو ٹیسٹ سیریز کا آغاز ہونے جارہا ہے۔
2018کی آخری ٹیسٹ سیریز سری لنکا میں کھیلی گئی تھی،تینوں کے تینوں میچز مہمان ٹیم انگلینڈ نے ہی اپنے نام کر لئے جبکہ سری لنکا نے انگلینڈ کے خلاف اب تک کی آخری سیریز 2014میں اسکے گھر میں ہی جیتی،اس نے 2میچزکی سیریز 0-1 سے اپنے نام کرلی۔یہ سیریز مہمان ٹیم کے لئے اس مرتبہ بھی خاصی حوصلہ کاسبب بنے گی کیونکہ انہیں یقین ہے کہ وہ اسپنرز کے چنگل میں اسپن وکٹوں پر جیت سکتے ہیں،پھر سیریز بھی ایسی ہو کہ جو ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کا حصہ ہے،اوپر سے پوائنٹس ٹیبل پر چوتھا نمبر،فائنل سے باہر ہونے کا خطرہ،سب سے بڑھ کر کم وقت اورسیکنڈ لاسٹ سیریز نے انگلش کیمپ کو ویسے ہی بے چین کرکے رکھ دیا ہے۔2014میں انگلش ٹیم سری لنکا سے آخری ٹیسٹ میچ ہاری تھی،چنانچہ گزشتہ 6میچز سے وہ ناقابل شکست بھی ہے،گزشتہ 2سیریز سے سری لنکا کے لئے ناممکن چیلنج بنی ہوئی ہے،اوپر سے لنکن ٹیم حال ہی میں جنوبی افریقا میں 2 ٹیسٹ میچزبری طرح ہار کر بکھری ہوئی ہے،ساتھ میں انجریز کے بےشمار مسائل میں بھی گھری ہوئی ہے تو شاید انگلش کیمپ کے لئے سوچنا آسان ہو کہ آئی لینڈرز کو ان کے گھر میں شکار کرنا اب کوئی مشکل بات نہ ہوگی۔
انگلینڈ کے لئے تھوڑی پریشانی کی جوبات ہوگی،وہ یہ ہے کہ سری لنکا کو سری لنکامیں ہرانا اتنا آسان بھی نہیں رہتا،اب تک کھیلے گئے16میچز میں اسے اگر چہ 7فتوحات کے ساتھ سبقت حاصل ہے لیکن 5میں شکست بھی ہوئی ہے،ان میچز میں انگلش ٹیم کسی بھی سنگل اننگ میں 500 کا مجموعہ سیٹ نہیں کرسکی،اس کا وہاں ہائی اسکور 460 اورکم اسکور 81 ہے۔میزبان ٹیم کے لئے شاید یہی باتیں راحت کا سبب ہونگی،پروٹیز میں شکست وہ بھی بھول چکے ہونگے،نئے د ن کے ساتھ نیا چیلنج لے کرکھیلیں گے،پھر انگلش کیمپ میں بین سٹوکس اورعادل رشید بھی نہیں ہیں،کووڈ ٹیسٹ کی وجہ سے معین علی پہلے ہی باہر ہوچکے ہیں،جوئے روٹ الیون کچھ نئے اور کچھ پرانے کھلاڑیوں کے ساتھ ایکشن میں مدمقابل ہوگی۔سری لنکا اپنی لائن میں اینجلیو میتھیوز کے آنے کے بعد مطمئن ہوگا،کپتان ڈیمتھ کرونارتنے ،کشال پریرا،کوشال مینڈس یاتھریمانے میں سے کسی ایک کے ہوتے ہوئے قدرے مطمئن ہوگا۔
کرک سین کا ماننا ہے کہ انگلش اسکواڈ پوری لائن کے ساتھ سامنے نہیں ہے،اس لئے آئی لینڈرزمطمئن ہوکر کھیلیں گے۔
گالے میں ایک عرصے سے کرکٹ نہیں ہورہی ہے،خود سری لنکا اپنے ملک میں اگست 2019کے بعد ایک بڑے وقفہ کو گزارتے ہوئے ٹیسٹ میچ کھیلے گا،وکٹ ابتدائی 2 یا 3 دن بیٹنگ کے لئے سازگا ہوگی اور اس کے بعد اسپنرز کو مدد دے گی ،محکمہ موسمیات کے مطابق بارش کی پیش گوئی پانچوں دن کے لئے ہے لیکن کھیل زیادہ متاثر نہیں ہوگا۔
گالے میں انگلینڈ اور سری لنکا کے درمیان 2میچز کی سیریز کا پہلا ٹیسٹ پاکستانی وقت کے مطابق آج صبح ساڑھے 9بجے شروع ہوگا۔
ٹاس جیتنے والی ٹیم پہلے بیٹنگ کو ترجیح دے گی۔پہلی باری میں 300سے زائد اسکور بن سکتے ہیں،چوتھی اننگ میں اسپنرز خطرناک ہونگے۔انگلینڈ اس میچ کے لئے فیورٹ ہے اور سیریز بھی اپنے نام کرسکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں