انضمام الحق نےاوول ٹیسٹ کے پہلے دن ہی فاتح ٹیم کا بتادیا

0 27

کرک سین کی خصوصی رپورٹ

ادھر اوول ٹیسٹ کے پہلے روز کے کھیل پر تبصرہ ضروری تھا۔ادھر پاکستان کے اسکواڈ کا اعلان ہوئے 2 دن گزر گئے تھے۔چنانچہ اس کے بعد کے اولین تبصرے میں دونوں باتیں ضروری تھیں۔مقصود اوول ٹیسٹ پر تبصرہ تھا جو ضروری تھا۔اب یہ بھی دیکھ لیں کہ باتیں ہی ایسی ہوتی ہیں۔بھارتی ٹیم اوول ٹیسٹ کے پہلے روز ایک چھوٹے اسکور پر ڈھیر ہوئی ہے۔ایسے میں اس اسکور کو بھی ٹھیک اگر کہا جائے تو اس کی بنیادی وجہ انگلش کپتان کا آئوٹ ہوجانا ہے۔

بھارت کا 191 اسکور بہت،کوہلی اور ٹھاکر کی تعریف

پاکستان کے سابق کپتان و قائد انضمام الحق کہتے ہیں کہ اوول کی وکٹ بہت مشکل ہے۔بڑے عرصے بعد ایسی پچ کسی ٹیسٹ دکھائی دی ہے۔50اوورز کے بعد بھی پرانے بال کے ساتھ سوئنگ ہورہاتھا۔موسم بھی سرد ہے۔چنانچہ بھارت کا 191 اسکور بھی بہت ہے۔ویرات کوہلی کی بات کریں تو اس نے 50 رنز زیادہ نہیں کئے۔سچی بات یہ ہے کہ اس وکٹ پر بہت اسکور ہے۔انضمام نے کوہلی کو 50پر جانے کو درست کہا ہے ۔ساتھ ہی انہوں نے ایک اور بھارتی کھلاڑی شردول ٹھاکر کی بڑی تعریف کی ہے۔انہوں نے ایسے 57 اسکور کئے۔کمال کا اعتماد تھا۔یہ ہاف سنچری میچ کے آخر میں بنیادی اننگ بن جائے گی۔

کوہلی الیون کی 50رنزکی برتری یقینی

انضمام مزید کہتے ہیں کہ بھارت کے بائولرز نے بھی اچھا حملہ کیا ہے۔جوئے روٹ کی وکٹ لے کر انہوں نے انگلش ٹیم کی کمر توڑ دی ہے۔اب انگلینڈ کی 3 وکٹیں گرچکی ہیں۔اب اس کا اسکور 53 ہے۔ٹھاکر کی اننگ نے اتنے اعتماد سے بیٹنگ کی۔بیٹ کو پیڈ سے پیچھا رکھا۔پہلے اوور سے سیدھا کھیل رہے تھے۔ایسا لگا کہ جیسے وہ نیٹ پریکٹس کر رہے تھے۔اب یہ اننگ انگلینڈ کے پاس شاید نہ ہو۔مجھے یقین ہے کہ بھارت کا یہ اسکور بہت ہے۔بھارت اسی پر 50 کی لیڈ لے سکتا ہے۔انضمام کہتے ہیں کہ بھارت کی برتری بنتی ہے۔چوتھی اننگ میں انگلینڈ کو 200سے 250 کا ہدف دے دیا تو انگلینڈ کو مشکل ہوگی۔

اب انضمام کا یہ کہنا کہ بھارت کو 50رنزکی لیڈ لینی چاہئے۔سوئنگ وکٹ پر انگلینڈ کو 141 پر یہ گھر سے باہر نکال رہے ہیں۔انضمام نے اپنے یوٹیوب چینل پر3 مرتبہ تکرار کے ساتھ بولا ہے کہ بھارت کو کم سے کم 50 رنزکی لیڈ لینی چاہئے۔اس کا مطلب صاف ہوا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ انگلش کیمپ ہمت ہار گیا ہے۔انہوں نے ایک قسم کی بھارتی فتح کی پیش گوئی کی ہے۔آگے چل کر انہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ دوسرے روز کا پہلا سیشن نہایت ہی اہم ہوگا۔اس میں بھارت نے 2سے 3 کھلاڑی آئوٹ کردیئے تو کوئی طاقت اسے برتری لینے سے روک نہیں سکے گی۔اب دیکھتے ہیں کہ ویرات کوہلی الیون انضمام کے اس اعتماد کے ساتھ کیا سلوک کرتے ہیں۔

اوول ٹیسٹ کی موجودہ پوزیشن

اس میں کوئی شبہ نہیں ہے کہ وکٹ تیز ہے۔اندازوں سے ہٹ کر پیسرز کو مدد دے رہی ہے۔پہلے روز 13وکٹوں کے عوض صرف 244رنزبنے ہیں۔یہ مطلب لیا جائے تو دوسرےروز بھارت کی بھی دوسری اننگ میں 6 وکٹیں گری ہونگی،۔انضمام کاتبصرہ سچ مان لیا جائے تو اگلے روز بھی 13 وکٹوں کے عوض اگر 244رنزبنے تو اس میں سے انگلینڈ کے 88 ہونگے۔بھارت کے 156 رنز ہونگے۔4 وکٹیں باقی ہونگی۔وہ200 کے ہدف کو سیٹ کرنے کی پوزیشن میں ہوگا۔

کرک سین کا تبصرہ

کرک سین پہلے ہی میچ کی رپورٹ کرچکا ہے۔بھارت کے 191 اسکور زیادہ نہیں ہیں۔پچ جیسی بھی ہے۔انگلش ہے۔انگلش کھلاڑیوں کے لئے بہر حال زیادہ مفید ہوگی۔میچ کا اختتامی سیشن تھا۔نئی بال تھی۔انگلینڈ کے 3 کھلاڑی گر گئے۔روٹ بھی چلے گئے۔روٹ کے بنائے گئے 21 رنزکو دیکھیں اور ڈیوڈ میلان کے 26 اسکور پر نگا ہ ڈالیں تو انگلش پلیئرز کے لئے مزید کم سے کم 150رنزبنانا کوئی مشکل نہیں ہوگا۔چنانچہ انگلینڈ لیڈ لینے کی پوزیشن میں ہے۔میچ ابھی بھی اسی کے ہاتھ میں ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.