آئی سی سی کے نومنتخب صدر نے بگ تھری کو لات ماردی،پاک بھارت سیریز کی بحالی کا اشارہ،بریکنگ نیوز

عمران عثمانی

آئی سی سی کے نومنتخب چیئرمین گریگ بارکلے نے منتخب ہونے کے 12 گھنٹے کے اندر بڑی شاٹ کھیل دی .کہتے ہیں کہ میڈیا نے بگ تھری کا تصور راغب کیا ہے ، لیکن میں اس پر یقین نہیں رکهتا ہوں۔ میرے لئے کوئی بڑا نہیں ،بگ تهری صرف آئی سی سی کے ممبر ہیں۔ وہ واقعی اہم ممبر ہونگے . بہت نتائج میں مدد کرتے ہیں لیکن وہ آئی سی سی کے انفرادی ممبر ہیں لہذا وہ اتنے ہی اہم ہیں جتنے اور.وہ دوسروں سے زیادہ اہم نہیں۔
انہوں نے کہا کہ میں آئی سی سی میں نہیں تھا جب بڑی تین قراردادیں پیش کی گئیں ، فنڈنگ ​ ماڈل تبدیل ہوا ، کچھ اچھی چیزیں بھی تھیں جو ایف ٹی پی کی طرح سامنے آئیں .فنڈنگ کی تقسیم اگرچہ ناہموار تھی ، نیوزی لینڈ اور دیگر ممبران پہلے بہتر تھے لیکن میرے خیال میں ششانک کے تحت جو کچھ ہوا وہ بالکل صحیح تها۔ اب پچھلے چار سالوں سے بگ تھری کا کوئی تصور نہیں ہے ، اور میں اس حقیقت کو جانتا ہوں کہ انگلینڈ اور آسٹریلیا بہت زیادہ اہم ہیں۔ ا بھارت تھوڑا سا مختلف معاملہ ہے ، وہ ایک بہت بڑی کرکیٹنگ فورس ہیں ، ہمیں ان کی ضرورت ہے .
بارکلے نے کہا ہے کہ 2023 سے 2031 کے فیوچر ٹور پروگرام پر گرین سگنل پوچکا ہے. میں امید کرتا ہوں کہ رکن ممالک اس وعدے کی تکمیل کریں گے.
آئی سی سی چیئرمین کا آدھی رات کو ڈرامائی انتخاب،دوسری ووٹنگ میں گریگ بارکلے جیت گئے،بریکنگ نیوز
اس کے مقابلے میں بھارت ،آسٹریلیا اور انگلینڈ نے جو ورلڈ سیریز کا تصور پیش کیا.اگر ایف ٹی پی کے ہوتے یہ ممکن ہے تو ٹھیک ہوگا لیکن اس پر ابھی تک کوئی کام نہیں کیا گیا ہے۔ ہوسکتا ہے کہ یہ بطور آئیڈیا بات کی گئی ہو۔ لیکن میں صرف اس بات پر زور دیتا ہوں کہ اس وقت جب ہم نے تمام باہمی انتظامات کے ساتھ ایک ایف ٹی پی تشکیل دے دیا ہے تو اس کی پاسداری کریں .میں یہ سوچتا ہوں کہ جن ممالک نے طے کیا ہے وہ اپنے وعدوں کا احترام کریں گے۔ . لہذا مجھے زیادہ یقین نہیں ہے کہ ورلڈ سیریز کا 4 ملکی منصوبہ چل سکے۔ اگر رکن ممالک کو دوطرفہ انتظامات کا موقع ملے تو یہ واقعی ان کا حق ہے .
بارکلے کہتے ہیں کہ تمام رکن ممالک کی باہمی سیریز کے حق میں ہوں.اس سے مالیاتی ماڈل کو مدد ملتی ہے.چنانچہ اس پر بھی کام کروںگا .
بارکلے کا یہ اشارہ پاک بھارت کرکٹ سیریز کی بحالی کی طرف تھا جو بھارتی حکومت کی ضد کی نذر ہوچکی ہے.
بارکلے نے گزشتہ رات کے نتائج کے مطابق اپنےمدمقابل امیدوار عمران خواجہ کو شکست دے کر چیئرمین شپ کا الیکشن جیتا تھا.

اپنا تبصرہ بھیجیں