آئی سی سی چیئرمین کا آدھی رات کو ڈرامائی انتخاب،دوسری ووٹنگ میں گریگ بارکلے جیت گئے،بریکنگ نیوز

عمران عثمانی

کرکٹ میں طاقتور گروپ جیت گیا،آئی سی سی چیئرمین شپ کا الیکشن ڈرامائی انداز میں نیوزی لینڈ کے گریگ بارکلے نے جیت لیا ہے۔آئی سی سی نے گریگ بارکلے کو اپنا نیا چیئرمین منتخب کیا ہے۔
منگل اور بدھ کی درمیانی شب کرکٹ کے گلوبل ادارے کی سربراہی کے سخت اور مشکل ترین الیکشن نتائج اچانک جاری کئے گئے ہیں جو وقت کے اعتبار سے بھی نہایت اہمیت کے حامل ہیں۔نیوزی لینڈکرکٹ کے سربراہ بارکلے نے دوسرے مرحلے کی ووٹنگ میں مطلوبہ 11ووٹ حاصل کر لئے ہیں اسے کرکٹ جنوبی افریقا سے ایک اہم 11 واںووٹ حاصل ہوگیا ہے ، اس سال جولائی میں شانک منوہر کے سبکدوش ہونے کے بعد عبوری چیئرمین کے عہدے پر موجودعمران خواجہ کو انہوں نےشکست دے دی ہے۔
Greg Barclay Elected Icc Chairman2020
گزشتہ ہفتے رائے شماری کے پہلے مرحلے میں بارکلے کو خواجہ کے 6 کے مقابلے میں 10 ووٹ ملے تھے لیکن آئی سی سی شرائط کے مطابق انہیں 2 تہائی یعنی 11 ووٹ کی ضرورت تھی – 16 رکنی آئی سی سی بورڈ کی دو تہائی اکثریت 11بنائی گئی ہے۔
بارکلے نےجیتنے کے بعد کہا ہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے صدر کی حیثیت سے منتخب ہونا میرے لئے اعزاز کی بات ہے اور میں اپنے ساتھی آئی سی سی ڈائریکٹرز کی حمایت پر ان کا شکریہ ادا کرتاہوں۔کووڈ-19کی وبا میں میں کرکٹ بحالی کے لئے پرعزم ہوں۔میں عمران خواجہ کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں اور میں مستقبل میں ان کے ساتھ قریبی تعلقات رکھوں گا۔
آئی سی سی قوانین کے مطابق اس مرحلے میں بھی اگر اکثریت نہ ملتی تو ایک بار پھر خفیہ رائے شماری ہوتی اور اس میں بھی ناکامی پر قائم مقام چیئر مین عمران خواجہ ہی اگلے سال تک کام کرتے رہتے لیکن وہ دوسرے مرحلہ میں ہار گئے ہیں۔
بارکلے اب آئی سی سی کی قیادت کے لئےنیوزی لینڈ کرکٹ کے عہدے سے سبکدوش ہوجائیں گے۔
آئی سی سی چیئرمین کا یہ نیا انتخاب ڈرامائی انداز میں ہوا ہے ،اب آئی سی سی کو اگلے 8سالہ عبوری منظور شدہ ایف ٹی پی کا چیلنج درپیش ہے جس میں ہر سال آئی سی سی گلوبل ایونٹ کااضافہ کیا گیا تھا اور بگ تھری نے مخالفت کی تھی،دیکھنا ہوگا کہ بارکلے اس معاملہ میں کیا کردار ادا کرتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں